اپنی سیاست بچا سکتے تھے مگر ہم نے ذمہ دارانہ فیصلہ کیا، مریم اورنگزیب

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہےکےسیاست کو بچانا آسان فیصلہ تھا لیکن ہم نے ذمہ دارانہ سوچ کا مظاہرہ کیا۔

اسلام آبادمیں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ سابقہ دور میں پانچ مرتبہ وزیر خزانہ، سات مرتبہ ایف بی آر کے چیئرمین اور چھ بار سیکریٹری فنانس کو تبدیل کیاگیا،جوچیخیں مار رہے ہیں انہیں عمران خان نے کارکردگی کی بنیاد پر وزارتوں سے نکالا ان کی اہلیت ان کے وزیراعظم نے قبول نہیں کی تو عوام کیسے کریں۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ معیشت تباہ اورمارکیٹ کا اعتماد ختم ہوا تو کمزور بنیادوں پرآئی ایم ایف کے ساتھ سخت شرائط طےکی گئیں۔ سیکریٹری فنانس نے کہا کہ یہ معاہدہ غلط ہے تو انہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا۔عمران خان نے آئی ایم ایف کی شرائط پر پچھلے دروازے سے دستخط کئے۔کہتے ہیں ہم دیکھیں گے، کیا دیکھیں گے، معاشی تباہی، غربت، 44 ہزار ارب روپے کا قرضہ؟

وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ ان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کو عوام نے دیکھا،جب انہیں پتہ چلا کہ تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو رہی ہے تو انہوں نے پٹرول پر غیر قانونی سبسڈی دی۔خزانہ میں اس کے لئے پیسے ہی نہیں تھے،پاکستان کے عوام نے ان کے جھوٹ اور منافقت دیکھی ہے۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھاکے رانا ثناء اللہ جب اپنے حلقے میں جاتے ہیں تو ان کے پیچھے عوام کی اتنی گاڑیاں ہوتی ہیں جتنی گاڑیاں عمران خان کے لانگ مارچ میں تھیں،پاکستان نالائقوں، نااہلوں، چوروں اور فسادیوں کے خلاف جاگ اٹھا ہے،اب نظمیں لگا کر اور جھوٹ بول کر عوام کو بے وقوف نہیں بنایاجا سکتا۔مہنگائی، بے روزگاری، بدتمیزی، بدتہذیبی، افراتفری، قرضہ، 16 فیصد مہنگائی، ایک کروڑ بے روزگار یہ سب آپ کے تحفے ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More