عوام کو سستا پیٹرول فراہم کرکے نقصان اٹھارہے ہیں، شوکت ترین

اسلام آباد: وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ ‏نومبر2020 سے اب تک پیٹرولیم کی بین الاقوامی قیمتوں میں166 فیصد اضافہ ہوا۔حکومت عوام کو بڑھتی قیمتوں سے بچانے کے لیے سیلز ٹیکس اور لیوی سے مسلسل آمدنی کا خسارہ برداشت کررہی ہے۔

وزیر خزانہ شوکت ترین نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے حوالے سے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ نومبر 2020ء سے اب تک پیٹرولیم کی عالمی قیمتوں میں 166 فیصد اضافہ ہوا ۔حکومت عوام کو بڑھتی قیمتوں سے بچانے کے لیے سیلز ٹیکس اور لیوی سے مسلسل آمدنی کا خسارہ برداشت کررہی ہے ۔

وزیرخزانہ کا کہنا تھا کہ 2022 میں اب تک حکومت کو اوسطاً 70 ارب روپے ماہانہ خسارہ اٹھانا پڑا ۔مجموعی طور پر سیلز ٹیکس اور لیوی کی مد میں پورے سال میں 840 ارب روپے کا نقصان ہوا ۔ملکی تاریخ میں کسی سیاسی حکومت نے 1 سال میں اس ریلیف کا ایک تہائی حصہ بھی عوام کو نہیں دیا ۔

شوکت ترین نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اس وقت بھی میرے ساتھ مختلف آپشنز پر غور کر رہے ہیں ۔وزیراعظم تنخواہوں میں حالیہ اضافے اور احساس راشن امداد کے باوجود بڑھتی قیمتوں کے اثرات ختم کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More