قندیل بلوچ قتل کیس کا مرکزی ملزم وسیم بری

ملتان : ہائیکورٹ بینچ نے قندیل بلوچ قتل کیس کے مرکزی ملزم وسیم کو بری کردیا ہے۔ جسٹس سہیل ناصر نے فیصلہ راضی نامہ اور گواہوں کے بیانات سے منحرف ہونے کی بنیاد پر سنایا ۔

ملتان کی ہائیکورٹ بینچ نے معروف سوشل میڈیا اسٹار قندیل بلوچ کے قتل میں ملوث مرکزی ملزم وسیم کو جسٹس سہیل ناصر نے راضی نامہ کی بنیاد اور گواہوں کے بیانات سے منحرف ہونے پر ملزم کو بری کردیا ۔ ملزم وسیم کو 27 ستمبر 2019 کو ملتان کی ماڈل کورٹ نے عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

ہائیکورٹ ملتان بینچ میں ملزم کی والدہ نے راضی نامہ کا بیان حلفی جمع کروایا۔وکیل درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ سیشن عدالت نے راضی نامہ کو نظر انداز کر دیا تھا۔ مدعی مقدمہ ملزم اور مقتولہ کا والد وفات پا چکا ہے۔ مقدمہ کے گواہان بھی ٹرائل کورٹ میں اپنے بیانات سے منحرف ہو گئے تھے۔

ملزم کے خلاف اپنی بہن ماڈل قندیل بلوچ کا گلہ دبا کر غیرت کے نام پر قتل کرنے کا الزام ہے۔ ملزم وسیم نے عدالت میں سزا منسوخی کی اپیل دائر کر رکھی ہے ۔مقتولہ کے دو بھائی سمیت 5 ملزمان بری ہوچکے ہیں۔ بری ہونیوالوں میں معروف مذہبی اسکالر مفتی عبدالقوی بھی شامل تھے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More