امریکا کی روس کو یوکرین پر جارحیت سے باز رہنے کی تنبیہ

واشنگٹن: امریکی صدر جو بائیڈن نے روسی صدر ولادیمیر پیوتن سے ٹیلی فونک رابطے میں یوکرین کے خلاف ممکنہ جارحیت سے باز رہنے کی تنبیہ کی ہے۔

روس اور یوکرین کے درمیان تنازعہ شدت اختیار کرتا جا رہا ہے ۔ امریکی صدر جو بائیڈن نے اپنی روسی ہم منصب ولادیمیر پیوتن کو یوکرین کے خلاف جارحیت سے باز رہنے کی تنبیہ کی ہے جبکہ یوکرین کے صدر امریکی صدر کو دورہ یوکرین کی دعوت دے دی۔ یوکرین کے صدر نے مختلف ممالک کے سفارتکاروں کو کیف چھوڑنے کے فیصلہ کو بڑی غلطی قرار دےدیا۔

یوکرین کے وزیر خارجہ دمترو کلیبا کا کہنا ہے کہ روس نے سرحد پر فوجیوں کی اضافی تعیناتی سے متعلق وضاحت دینے کی باضابطہ درخواستوں کو نظر انداز کیا ہے جبکہ روس نے یوکرین کے سرحد پر تقریباً ایک لاکھ فوجی تعینات کرنے کے باوجود یوکرین پر حملہ کرنے کے منصوبے کی تردید کی ہے۔

روسی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ مغربی ممالک جھوٹی معلومات فراہم کر رہے ہیں جبکہ امریکا سمیت بعض مغربی ممالک کا کہنا ہے کہ روس فوجی حملے کی تیاری کر رہا ہے اوروہ کسی بھی وقت یوکرین پر فضائی حملے سے جنگ کا آغاز کر سکتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More