امریکانے ہمارے سفیرکو دھمکی دی عمران خان کو ہٹاؤ، چیئرمین پی ٹی آئی

اٹک : پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ جو لوگ سازش روک سکتے تھے، میں نے خود بھی ان کو بتایا اور وزیر خارجہ کو بھی کہا کہ ان کو بتادو۔میں نے سازش روکنے والوں کو بتایا کہ حکومت گئی تو بڑا نقصان ہوگا۔ جو لوگ سازش کو روک سکتے تھے انہیں بتایا کہ بڑی مشکل سے معیشت کو سنبھالا ہے۔

اٹک میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے کہا کہ ہم اللہ کے سوا کسی کے سامنے سجدہ نہیں کرتے۔ نوجوان اور خواتین سے اپیل ہے کہ میری جنگ میں شامل ہوجائیں۔جیسے تحریک پاکستان میں خواتین نے مردوں کے شانہ بشانہ کردار ادا کیا تھا۔ہم نے فیصلہ کرنا ہے کہ ہم آزاد ملک بنیں گے یا امریکیوں کے غلاموں کی غلامی کریں گے۔

عمران خان نے کہا کہ جب تک زندگی ہے میں چوروں، ڈاکوؤں اور ان غلاموں کو قبول نہیں کروں گا۔ جس طرح میری والدہ نے مجھے بتایا، اسی طرح آج میری بہنوں کو اپنے بچوں کو یہ بات بتانی ہے کہ غلامی کیا ہوتی ہے۔ایک غلامی قبضہ کرکے کی جاتی ہے اور دوسری غلامی دھمکی دیکر کی جاتی ہے۔ امریکا سے ایک فون کال آئی اور پرویز مشرف نے گھٹنے ٹیک دیئے۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ آزاد خارجہ پالیسی وہ ہوتی ہے جب آپ اپنے لوگوں کو دوسرے ملک کے لیے قربان نہیں کرتے۔ بڑا بھائی باہر بیٹھ کر دوسروں کی غلامی کرتا ہے اور چھاٹا بھائی جو بھی بوٹ دیکھتا ہے، پالش کرنا شروع کردیتا ہے۔مولانا فضل الرحمن نے کوئی دینی وزارت نہیں وزارت مواصلات لی، جس میں پیسا بنتا تھا۔

سابق و زیر اعظم نے کہا کہ امریکی انڈر سیکریٹری نے ہمارے سفیر کو دھمکی دی کہ عمران خان کو ہٹاؤ۔ اگر عمران خان کو نہ ہٹایا گیا تو پاکستان کے مسائل ہوں گے۔ سازش اس وقت کی گئی جب ملک ترقی کررہا تھا۔ جیل جانے کو، جان کی قربانی دینے کو تیار ہوں، لیکن امریکا کی غلام قبول نہیں کروں گا ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More