متحدہ اپوزیشن کا منی بجٹ روکنے کیلئے حکومت کا بھرپور مقابلے کا فیصلہ

اسلام آباد: متحدہ اپوزیشن نے منی بجٹ کے دوران حکومت کا بھرپور مقابلہ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثنااللہ کہتے ہین منی بجٹ کو روکنے کی پوری کوشش کریں گے مگر ڈنڈے سے تو نہیں روک سکتے ۔

اپوزیشن لیڈر کے چیمبر میں پارلیمنٹ میں اپوزیشن جماعتوں کامشترکہ اجلاس ہوا جس میں مسلم لیگ ن ،پاکستان پیپلزپارٹی اور جمعیت علمااسلام پارلیمانی لیڈر شریک ہوئے ۔اجلاس میں منی بجٹ سمیت دیگراہم امور پر مشاورت کی گئی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ منی بجٹ کا راستہ روکنےکیلئے بھرپور مقابلہ کیا جائے گا ۔

مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثنااللہ نے کہا کہ منی بجٹ کو روکنے کی پوری کوشش کریں گے مگر ڈنڈے سے تو نہیں روک سکتے اور نہ ہی ٹی یل پی کا طرز عمل اختیار کریں گے اپنے ارکان کی تعداد کوپورا کریں گے۔

راناثنااللہ کا کہنا تھا کہ مشترکہ اجلاس میں اتحادیوں اور حکومتی ارکان کو کالز نہ آتیں تو حکومت کو شکست ہوجاتی۔ ایک رکن کو کہا گیا کہ عزت سے اجلاس میں آنا چاہتے ہوتو جہاز بھیج دیتے ہیں ورنہ اجلاس میں لانے کے لئے بندے بھیج دیتے ہیں ۔اس بار پنجاب اور کے پی کے میں ہونے والے دو انتخابات سے تو لگتا ہے کہ اب کالز نہیں آئیں۔

متحدہ اپوزیشن کے اجلاس میں اپوزیشن جماعتوں نے پیپلز پارٹی کے سید نوید قمر سے چئیرمین نیب کیلئے نام فراہم نہ کرنے پر سوال کیا تو انہوں نے بتایا کہ ابھی ناموں پر غور جاری ہے ۔جمعیت علما اسلام نے تجویز دی کہ اگر پیپلزپارٹی نام فائنل نہیں کررہی تو جونام آئے ہیں وہ ایوان صدر کو بھجواددیتے دیں ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More