اسلام آباد میں 23 مارچ کو دہشتگردی کا خطرہ ہے، شیخ رشید

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ پاکستان کسی قیمت پر بھی دہشتگردی کی اجازت نہیں دے گا۔ طالبان سے اب کوئی مذاکرات نہیں ہورہے۔

سینیٹ کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا کہ دہشتگردی کا مقابلہ کرنے کے لیے اپوزیشن کے ساتھ ہیں۔ ملک آپ کو بھی اتنا ہی عزیز ہے جتنا عمران خان کو عزیز ہے۔داسو اور گوادر واقعے کے ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ ہمیں دہشت گردی کے خلاف ایک بیانیہ بنانا چاہیے ۔

شیخ رشید نے کہا کہ ٹی ٹی پی کے کئی گروپ بن چکے ہیں ان کے ناموں میں نہیں جانا چاہتا ہوں۔ بلوچستان کے ساتھ دو سو کلو میٹر باڑ لگانا باقی ہے۔ بھارت کبھی افغان طالبان اور پاکستان کے بہتر تعلقات نہیں چاہتا۔بھارتی ایجنسی ’را‘ پاکستانی جرائم پیشہ افراد کا استعمال کررہی ہے۔پاکستان میں فرقہ وارانہ دہشتگردی بھی ہے۔ہم اندر اور باہر اور تقریر کرتے ہیں۔ زیادہ باتیں کیں تو میڈیا میں طوفان اٹھ جائےگا۔

شیخ رشید نے کہا کہ اپوزیشن کو ڈرا نہیں رہا تاہم 23 مارچ کو آنا ہے تو شوق پورا کرلیں۔ میں کہوں گا کہ دہشتگردی اور کورونا کا خطرہ ہے۔اپوزیشن 23 کے بجائے 27 مارچ کو اسلام آباد آجائے۔23 مارچ کو آدھا اسلام آباد کسی اور کے کنٹرول میں ہوگا۔ جیمرز لگے ہوں گے۔ میڈیا پر ان کا شو نہیں چلے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More