طالبان حکومت نے سالانہ بجٹ کا مسودہ تیار کرلیا

کابل: افغان وزارت خزانہ نے اپنے سالانہ بجٹ کا مسودہ تیار کر لیا ہے۔ افغان وزارت خزانہ کے ترجمان کے مطابق گزشتہ 2 دہائیوں کے دوران یہ پہلا موقع ہے کہ کسی بیرونی امداد کے بغیر بجٹ تیار کیا گیا ہے۔

غیرملکی خبرایجنسی کے مطابق یہ پیشرفت ایک ایسے موقع پر سامنے آئی ہے۔ جب افغانستان کو اقتصادی حوالے سے سخت پریشانیوں کا سامنا ہے۔ اور اقوام متحدہ کے مطابق ملک کو افلاس اور بھوک کے طوفان کا سامنا ہے۔

افغان وزارت خزانہ کے ترجمان احمد ولی نے اس مجوزہ بجٹ کا حجم نہیں بتایا۔ ان کا کہنا تھا کہ سال 2022کے دسمبر تک کے لیے اس بجٹ کی تفصیلات جاری کرنے سے پہلے کابینہ سے اس کی منظوری لی جائے گی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More