ملک کے حالات بہتر ہو رہے ہیں، اسپیکر قومی اسمبلی کا دعویٰ

صوابی:اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا ہے کہ چالیس سال تک افغانستان میں جنگ رہی ہے جس نے خطے پر منفی اثرات چھوڑے ہیں۔

صوابی میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئےاسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا تھا کہ قومی بجٹ کا بڑا حصہ دہشتگردی کے خلاف جنگ کے لیے استعمال ہوتا تھا جس کی وجہ سے معیشت کمزور ہوئی۔ چالیس سالہ افغان جنگ نے خطے پر منفی اثرات چھوڑے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو عوام کی تکلیف کا احساس ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا کوئی ذاتی کاروبار نہیں ہے ۔ وہ صرف اور صرف اپنی قوم اور ملک کا سوچتے ہیں۔ پوری دنیا اس وقت مشکل حالات سے گزر رہی ہے۔کورونا وباء نے پوری دنیا کی معیشت کو متاثر کیا ہے جس کی وجہ سے بین الاقوامی سطح پر مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے۔

اسپیکر قومی اسمبلی کا کہنا تھا حالات بہتر ہو رہے ہیں۔ قوم کو مشکلات سے نکالنے کے لیے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا جائے گا۔خطے میں امن کے قیام سے ترقی کی نئی راہیں کھولیں گی اور ہم وسطی ایشیائی ریاستوں تک اپنی برآمدات کو بڑھا سکیں گے۔اسپیکر اسد قیصر نے سابقہ حکومتوں کو منافع بخش قومی اداروں کی تباہی کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کہا کہ کوئی ایسا قومی ادارہ نہیں چھوڑا تھا جو منافع میں ہو۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More