سیشن عدالت نے صحافی محسن بیگ کی گرفتاری غیرقانونی قرار دے دی

اسلام آباد: ایڈیشنل سیشن جج اسلام آباد ظفر اقبال نے صحافی محسن بیگ کی ایف آئی اے کی جانب سے گرفتاری کو غیرقانونی قرار دے دیا ۔ عدالت نے کہاکہ ایف آئی اے اور ایس ایچ او کی ایف آئی آر سے ثابت ہوتا ہے چھاپہ غیر قانونی مارا گیا۔ عدالت نے ایس ایچ او تھانہ مارگلہ کیخلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے حکم نامے کی کاپی آئی جی اسلام آباد کوبھیجنے کی ہدایت کردی ۔

اسلام آباد کی مقامی عدالت کے جج ظفراقبال نے سینئر صحافی محسن جمیل بیگ کی ایف آئی اے کی جانب سے غیر قانونی طور پر گرفتاری سے متعلق درخواست پر سماعت کی۔عدالت نے فریقین کے دلائل مکمل ہونے پرایف آئی اے کی جانب سے گرفتاری اور گھر پر چھاپے اور چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرنے سے متعلق فیصلہ جاری کردیا۔

پانچ صفحات پر مشتمل تحریری حکم نامے میں کہاگیا کہ مقدمہ نو اور ساڑھے نو بجے گھر پر بنا جبکہ کسی سرچ وارنٹ کے ریڈ کردیا گیا۔محسن بیگ کا بیان پولیس ریکارڈ کرے اور قانون کے مطابق کارروائی کرے۔فیصلے کے مطابق دن سوا دو بجے تک ایس ایچ او نے ریکارڈ اور غیرقانونی حراست میں رکھے محسن بیگ کونہیں پیش کیا۔

فیصلے کے مطابق ایف آئی اے اور ایس ایچ او کی ایف آئی آر سے ثابت ہوتا ہے چھاپہ غیر قانونی مارا گیا، چھاپہ مارنے والی ٹیم میں جو لوگ شامل تھے وہ چھاپہ مارنے کا اختیار نہیں رکھتے تھے۔فیصلہ کے مطابق تھانہ مارگلہ ایس ایچ او نے ان غیر قانونی افراد کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی بجائے اپنی کارکردگی دکھانے کیلئے الگ مقدمہ درج کیا،ریکارڈ سے ایس ایچ او کا غیر قانونی اختیار ظاہر ہوتا ہے۔

عدالت نے حکم نامے کی کاپی آئی جی اسلام آباد کوبھیجنے کی ہدایت کرتے ہوئے آئی جی کو ایس ایچ او کے خلاف کارروائی کا حکم بھی دیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More