مہنگائی کی مجموعی سالانہ شرح 15 اعشاریہ 90 فیصد پر پہنچ گئی

اسلام آباد: رواں ماہ کے چوتھے ہفتے میں بیشتر اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ ہفتہ وار مہنگائی کی شرح صفر اعشاریہ 51 فیصد بڑھ گئی ۔ سالانہ بنیاد پر مہنگائی کی مجموعی شرح 15 اعشاریہ 90 فیصد کی سطح پر آگئی ۔

ادارہ شماریات نے مہنگائی کے حوالے سے ہفتہ وار رپورٹ جاری کردی ہے ۔ ہفتہ وار مہنگائی کی شرح صفر اعشاریہ 51 فیصد جبکہ سالانہ بنیاد پر مہنگائی کی مجموعی شرح 15 اعشاریہ 90 فیصد کی سطح پر آگئی۔ ایک ہفتے کے دوران 20 اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کی گئی ۔

رپورٹ کے مطابق رواں ہفتے برائلر مرغی کی فی کلو قیمت 31 روپے 97 پیسے مہنگی ہو گئی۔برائلر مرغی کی فی کلو قیمت 221 روپے سے بڑھ کر 253 روپے کی سطح پر پہنچ گئی۔ایک ہفتے کے دوران ٹماٹروں کی فی کلو قیمت میں 4 روپے 83 پیسے کا اضافہ ہوا۔ مسٹرڈ آئل کی فی کلو قیمت 11 روپے 92 بڑھ گئی۔

ادارہ شماریات کے مطابق رواں ہفتے ویجٹیبل گھی کا اڑھائی کلو ٹن 5 روپے 38 پیسے ، 20 کلو آٹے کا تھیلا 1 روپے 21 پیسے اضافہ ہوا۔رواں ہفتے مٹن ،تازہ دوددھ،دہی باسمتی ٹوٹہ چاول بھی مہنگے ہوئے ۔ایک ہفتے کے دوران 11 اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں کمی ہوئی۔فروری کے چوتھے ہفتے لہسن کی فی 21 روپے52 پیسے سستا ہوا۔

ایک ہفتے کے دوران انڈوں کی فی درجن قیمت میں 3 روپے 98 پیسے کی کمی ہوئی ۔پیاز،آلو،گڑ دال ماش اور دال مسور کی قیمتوں میں بھی معمولی کمی ہوئی۔ایک ہفتے کے دوران بریڈ،بچوں کے دودھ سمیت 20 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More