وزیر داخلہ کی قائمہ کمیٹی میں بلوچستان واقعے پر بریفنگ

اسلام آباد: سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کا اجلاس ہوا۔ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کمیٹی کو بلوچستان میں حالیہ دہشتگردی کے واقعات پر بریفنگ دی۔

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں بلوچستان میں پیش آئے حالیہ دہشتگردی کے واقعات پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ دہشتگردوں کے رابطے بھارت اور افغانستان سے تھے۔

شیخ رشید نے بریفنگ میں کہا کہ کل کے واقعے میں ایک میجر سمیت ہمارے سات لوگ شہید ہوئے ہیں۔دہشتگرد ملک میں کہیں بھی کوئی واردات کرسکتے ہیں۔ہم نے تمام چیف سیکرٹریز کو ہدایت کی ہے کہ وہ فورسز کو الرٹ رکھیں۔

شیخ رشید نے کہا کہ شروع میں طالبان نےٹی ٹی پی سے بات چیت کی۔طالبان نے کوشش کی کہ ٹی ٹی پی کے لوگ پاکستان کے ساتھ معاملات طے کریں۔ٹی ٹی پی سے مذاکرات آگے نہیں چل سکے۔ٹی ٹی پی کی شرائط ایسی تھیں جو نہیں مانی جاسکتیں۔

شیخ رشید نےکہاطالبان کے ساتھ تعلقات بہت اچھے ہیں۔ وزیراعظم ہر جگہ کوشش کررہے ہیں طالبان کی مدد کی جائے۔ سیاسی لوگوں سے سیاسی طریقے سے اور جو ہتھیار اٹھائے اس سے طاقت سے نمٹنا چاہئے۔اگر کوئی پاک افواج یا آرمڈ سول فورسز کے خلاف کاروائی کرے تو پھر جواب دینا بنتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More