فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف مہم ناقابل برداشت ہے، وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیراعظم شہباز شریف نے معیشت اور مہنگائی کو سب سے بڑا چیلنج قرار دیدیا۔ کہتے ہیں کسی نے ملکی وسائل کا ناجائز استعمال کیا تو قانون کا راستہ اپنائیں گے۔ پارلیمان کی مدت ڈیڑھ سال ہے۔ ہم نے کتنی مدت رہنا ہے فیصلہ اتحادی کرینگے۔ فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف مہم ناقابل برداشت ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ معیشت اور مہنگائی کو سب سے بڑا چیلنج ہے۔ اب پنجاب اسپیڈ نہیں پاکستان اسپیڈ ہوگی۔ ان کاکہنا تھا کہ سیاسی سرگرمیوں کی سب کو اجازت ہے۔ انتشار پھیلانے کی اجازت نہیں دیں گے۔ آئین شکنوں کے خلاف سپریم کورٹ کے حکم پر من و عن عمل کریں گے۔

وزیراعظم کاکہنا تھا کہ نیب کو کسی کے خلاف انتقامی کارروائی کےلئے استعمال نہیں کرینگے۔ امید ہے پیپلز پارٹی کابینہ کا حصہ بنے گی۔ اتحادی حکومت ہے سب کو شامل کرنا پڑےگا۔ لیگی وزراءکے قلمدان نواز شریف فائنل کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ کشمیر، افغانستان پر بریفنگ پارلیمان میں ہوئی تو لیٹر گیٹ پر کیوں نہیں تحریک انصاف والے خزانہ خالی کر گئے ہیں۔ گورنر اسٹیٹ بینک کے مستقبل پر بھی مشاورت ہوگی۔

شہباز شریف کاکہنا تھا کہ کسی نے ملکی وسائل کا ناجائز استعمال کیا تو قانون کا راستہ اپنائیں گے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ نون لیگ کی سوچ ہے کہ اصلاحات کریں اور الیکشن میں جائیں گے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ عمران خان نے دوست ممالک کو بھی ناراض کیا۔ جو ممالک دوست بننا چاہتے تھے ان سے بھی تعلقات خراب ہو گئے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ تارکین وطن ہمارے سفیر ہیں۔ ان کو ووٹنگ کا پورا حق ہے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ نیب نیازی گٹھ جوڑ کی چہرہ دستیاں سب کے سامنے ہیں۔ ہر فیصلہ مشاورت سے کیا جائے گا۔

وزیراعظم شہباز شریف کاکہنا تھا کہ نوازشریف کو پاسپورٹ جاری ہورہا ہے نوازشریف پاکستانی ہیں اور پاسپورٹ ان کا حق ہے

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More