ملک میں دہشگردی میں اضافہ ہوا ہے، شیریں مزاری

اسلام آباد: وفاقی وزیر شیریں مزاری کا کہنا ہے کہ افغانستان بارڈر کراسنگ سے ملک میں سیکیورٹی مسائل پیدا ہوئے ۔اب جنگوں کے طریقہ کار بدل چکے ہیں ۔خطے میں خطرات سے نمٹنے کے لیے باہمی تعاون کی ضرورت ہے۔

اسلام آباد میں انسٹیٹوٹ آف ریجنل اسٹیڈیز میں علاقائی ممالک کو درپیش اندرونی چیلیجز کے حوالے سے تقریب کا انعقاد ہوا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیریں کا کہنا تھا کہ ملک میں دہشگردی میں اضافہ ہوا ہے ۔پاک افغان بارڈر پر دہشت گردوں کو پناہ ملنے سے سیکیورٹی مسائل درپیش ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے انسانی حقوق سے متعلق متعدد قوانین بنائے ہیں لیکن اینٹی ٹارچر اور جبری گمشدگی کے خلاف قانون ابھی پاس نہیں ہو سکے۔وفاقی وزیر شیریں مزاری نے مزید کہا کہ کورونا وبا میں ملک میں اسمارٹ لاک ڈاؤن کی حکمت عملی بہت کامیاب رہی جسکی وجہ سے ہم بہت سے درپیش مسائل سے نمٹنے میں کامیاب ہوئےہیں ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More