کالعدم ٹی ایل پی کے ساتھ مذاکرات قانون کے مطابق ہوںگے، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کالعدم تنظیم ٹی ایل پی کی جانب سے پُر تشدد احتجاج اور راستے بند کرنے کے حوالے سے متنبہ کیا ہے کہ ریاست کو کمزور نہ سمجھیں۔ ہم نے بڑے بڑے دہشت گرد گروپس کو شکست دی ہے۔

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کالعدم ٹی ایل پی کے احتجاج میں 5 پولیس اہل کار شہید اور درجنوں زخمی ہوئے ہیںپانچ چھ دن سے جی ٹی روڈ بند ہے۔ اور تاجر ریاست کی طرف دیکھ رہے ہیں۔حکومت نے بہت صبر کا مظاہرہ کیا ہے۔ یہ جان لیں کہ ہم نے بڑے بڑے دہشت گرد گروپس کو شکست دی ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ ٹی ایل پی کے ساتھ مذاکرات آئین اور قانون کے مطابق ہوں گے۔ ملک میں بادشاہت نہیں جمہوریت ہے۔حکومت سب سے مذاکرات کے لیے تیار ہے۔ تحریک لبیک والے ایک جتھہ لے کر آگئے اور حکومت کا مذاق اڑایا جا رہا ہے۔

وزیر اطلاعات نے واضح کیا کہ ریاست کو کم زور نہ سمجھیں۔ احتجاج ختم کریں اور اپنے گھروں کو جائیں۔ حکومت زیادہ دیر مذاق برداشت نہیں کر سکتی ہے ۔ مظاہرین کو ایک حد سے آگے جانے کی اجازت نہیں دی جا سکتی ہے۔ احتجاج کے باعث صورت حال ایسی ہو گئی ہے کہ کلمہ گو کو اپنی گواہی دینا پڑ رہی ہے۔

انھوں نے کہا رحمتہ للعالمینﷺ سے متعلق پوری امت مسلمہ متحد ہے۔ ہم امن سے معاملات حل کرنا چاہتے ہیں تاہم اسے ریاست کی کمزوری نہ سمجھا جائے۔ ڈنڈوں کے زور پر مطالبات تسلیم نہیں کرائے جا سکتے۔ ریاست کی رٹ برقرار رکھنے کے لیے کسی بھی حد تک جانے کو تیار ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More