ملک میں وحشت اور دہشت کا کھیل کھیلنے کی اجازت کسی کو نہیں دینگے، طاہر اشرفی

اسلام آباد: وزیراعظم کے نمائندہ خصوصی مولانا طاہر اشرفی کا کہنا ہے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور وزیراعظم عمران نے واضع طور کہا ہے انتہاء پسندی کسی صورت قبول نہیں کی جائے گی۔

انہوں نے کہا ملک میں وحشت اور دہشت کا کھیل کھیلنے کی اجازت کسی کو نہیں دینگے، پاکستان میں تمام مکاتب فکر کے ذ مہ داروں کو خاموشی توڑنی ہوگی، کسی کو بھی مذہب کے نام پر بدمعاشی نہیں کرنے دینگے۔

راولپنڈی میں آل پاکستان مائنارٹی الائنس کے زیراہتمام یونِٹی اِن ڈائیورسٹی کانفرنس سے خطاب میں مولانا حافظ طاہر اشرفی نے کہا سری لنکن مینیجر دس سال سے پاکستان میں کام کررہا تھا دین اسلام بھی کہتا ہے کام پورا کرو جس کام کی تنخواہ لیتے ہو،سری لنکن منیجر کو زندہ جلانے والے پاکستان کی بدنامی کا باعث بنے ہیں، ایک انسان کو زندہ جلانے والے اسلام اور پاکستان کے نمائندے نہیں، چیف جسٹس آف پاکستان سے درخواست کی ہے کہ واقعے کا اسپیڈی ٹرائل ہونا چاہئے۔

کانفرنس سے خطاب میں معروف عالم دین مولانا طارق جمیل نے کہا معاشرے میں ہر جگہ ظلم ہے ہمیں ترجیحات طے کرنی ہونگی کہ ہم نے اللہ کے ہاں حاضر ہوکر کیا جواب دینا ہے، برائی کا جواب اچھائی سے دینا انسانیت کی معراج کی صفات میں شامل ہیں، بے گناہوں جلا کر نبی کی تعلیمات کے خلاف ہے۔

چئیرمین رویت ہلال کمیٹی عبدالخبیر آزاد نے کہا قائد اعظم نے کہا تھا اقلیتوں کا تحفظ ہماری ذ مہ داری ہے، سانحہ سیالکوٹ درندگی ہے اسکی جتنی مذمت کی جائے کم ہے، سری لنکن عوام اور اسکی فیملی کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔

آل پاکستان مائنارٹی الائنس کے چئیرمین ڈاکٹر پال بھٹی، بشپ جوزف اور دیگر ن مقررین نے بھی یونِٹی ان ڈائیورسٹی کانفرنس سے خطاب کیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More