سپریم کورٹ سیاسی لڑائی سے خود کو الگ رکھے، مریم نواز

لاہور: مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ فتنہ خان کی آئیں بائیں شائیں سوائے شرمندگی اور ناکامی کے اعتراف کے اور کچھ بھی نہیں۔30 لاکھ کے دعوے کے برعکس 20 ہزار افراد بھی جمع نہ کر سکنے پر بیچارے کی ذہنی حالت قابلِ رحم ہو گئی ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں مریم نواز نے سابق وزیراعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ انقلاب اپنا راستہ خود بناتا ہے۔ پولیس کے روکنے سے سے نہیں رکتا۔‏جو انقلاب پولیس دیکھ کر دوڑ لگا دے اُسے ڈوب مرنا چاہئے۔کہاں 30لاکھ کا دعویٰ اور کہاں 10ہزار تماشائی! کھسیانی بلی کے پاس نوچنے کو کھمبا تو ہوتا ہے مگر اس نیم پاگل شخص کے پاس تو وہ بھی نہیں۔

مریم نواز نے کہا کہ ‏فتنہ خان جس سپریم کورٹ کو چند دن پہلے تک گالیاں دے رہا تھا آج اسی کی آڑ لے کر اپنے انتشار کے ایجنڈے کی تکمیل چاہتا ہے۔سپریم کورٹ کو چوکنا رہنا ہو گا اور اس سیاسی لڑائی سے خود کو الگ رکھنا ہو گا ورنہ جانبداری کا تاتر مضبوط ہو گا جو عدلیہ کے لیے بطور ادارہ نقصان دہ ہے۔

ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ عمران خان کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار جو اس فتنہ کی فتنے بازی کا شکار ہوئے اور اس کے بلوایوں اور مسلح جتھوں کے ہاتھوں اپنی جانیں گنوا بیٹھے۔انکے گھروں میں جا کر لواحقین کے سامنے اپنے گناہ کا اعتراف کرنا چاہیے اور انُ سے معافی مانگنی چاہیے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More