تازہ ترین کھیل

منتقم مزاج یا مغرور ہونے کا تاثر غلط ہے، وقار یونس

قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ وقار یونس کا کہنا ہے کہ وہ منتقم مزاج یا مغرور نہیں ہیں۔ کبھی کسی کھلاڑی کا کیریئر ختم کرنے کی کوشش نہیں کی۔ بورڈ کو دی خفیہ رپورٹ کا افشا ہونا افسوسناک ہے۔

وقار یونس نے کہا کہ ان کے بارے میں منتقم مزاج یا مغرور ہونے کا تاثر درست نہیں ہے۔ کبھی کسی کا کیریئر ختم کرنے کی کوشش نہیں کی۔ اچھے کھلاڑی کو کوئی احمق ہی ڈراپ کر سکتا ہے۔ وقار یونس نے کہا کہ عبد الرزاق، محمد یوسف اور شعیب اختر اپنا بہترین وقت پورا کرچکے تھے۔ سابق پیسر تین اوورز بھی پوری قوت سے نہیں کر رہے تھے۔ اس لیے دو ہزار گیارہ ورلڈ کپ سیمی فائنل میں ان کی جگہ وہاب ریاض کو شامل کیا جس نے بھارت کے پانچ کھلاڑی آؤٹ کیے۔

سابق کپتان نے کہا کہ وہ ہمیشہ سینئرز کے ساتھ نئے کرکٹرز کو مواقع دینے کے حامی رہے ہیں تاکہ ہر پلیئر کا متبادل موجود ہو۔ انہوں نے ورلڈ کپ میں کھلاڑیوں کے رویے سے متعلق رپورٹ افشا ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بورڈ کی دی گئی خفیہ رپورٹ کا منظرعام پر آنا مناسب نہیں ہے۔ اس میں حقائق وہ نہیں، جس انداز میں انہیں پیش کیا گیا ہے۔ کچھ کھلاڑیوں کو بہتری کے لیے ڈومیسٹک کرکٹ میں بھیجنا ضروری ہے۔ ہمیں ان کرکٹرز کی ضرورت ہے جن کا رویہ درست ہو۔ ڈیڑھ سال تک ان کی وسیم اکرم سے بات چیت نہیں تھی لیکن میدان میں ہم ایک دوسرے کو سپورٹ کرتے تھے۔

وقار یونس نے کہا کہ مستقبل کی مضبوط ٹیمیں تشکیل دینے کے لیے ڈومیسٹک کرکٹ کو فروغ دینے کے ساتھ اپنے نوجوان کرکٹرز کو آسٹریلیا، انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقہ میں کھیلنے کے زیادہ مواقع فراہم کرنا ہوں گے۔ ملکی سطح کے مقابلوں میں ٹیمیں زیادہ اور کوالٹی کم ہوتی ہے۔

Related posts

وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف کی ملاقات، امن و امان کی صورتحال پر گفتگو

faraz ahmed

فیصل آباد: زمین کے تنازع پر 3 افراد جان سے گئے

Beenish Umer

میئر کراچی وسیم اختر کا اب تک نیوزکا دورہ

login web

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More