قائمہ کمیٹی کا ایف بی آر سے ٹیکس کمشنر سے اختیارات واپس لینے کا حکم

اسلام آباد: سینیٹ کی قائمہ کمیٹی خزانہ نے ملک میں بڑھتی مہنگائی کا نوٹس لے لیا ۔ مشیر خزانہ، سیکریٹری خزانہ اورگورنر اسٹیٹ بینک کو آئندہ اجلاس میں طلب کر لیا ۔

چیئرمین طلحہ محمود کی زیرصدارت سینیٹ کی خزانہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں آئی ایم ایف سے جاری مذاکرات کے بعد ملک میں بڑھتی مہنگائی پر غور کیا گیا۔ کمیٹی نے اصل صورتحال کا تعین کرنے کیلئے مشیر خزانہ اور گورنر اسٹیٹ بینک کو آئندہ اجلاس میں طلب کر لیا۔

کمیٹی نے ایف بی آر کی جانب سے ٹیکس گزاروں کےاکاؤنٹس سے رقم نکالنے کےمعاملے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ٹیکس ادا کرنے والوں کو ہراساں کیا جائے گا۔

چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ ڈیفالٹرز کو نوٹس بھیجتے ہی اکاؤنٹس سےرقم نکال لی جاتی ہے ۔ ایف بی آرکے شوکاز نوٹسز سے کارباری طبقہ پریشان ہے۔ ایف بی آرحکام نے اس تاثر کی نفی کی تاہم ممبران کمیٹی نے نئے اختیار کو واپس لینے کی سفارش کی۔

چیئرمین طلحہٰ محمود نے کہا کہ کمشنر کو اختیارات ملنے اور ایف بی آرکے شوکاز نوٹسز سے کارباری طبقہ پریشان ہے۔کمیٹی نے متفقہ طور پر ایف بی آر کو ٹیکس کمشنر سے اختیارات فوری واپس لیکر آگاہ کرنے کا حکم دیا۔ کمیٹی نے ڈھائی لاکھ روپے سے زیادہ کی ادائیگی چیک کے بجائے ڈیجیٹل طریقے سے کرنے کی شرط کی بھی مخالفت کردی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More