سری لنکا کے وزیراعظم مہندا راجا پاکسے مستعفی

کولمبو: سری لنکا کے وزیراعظم مہندا راجا پاکسے نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

وزیر صحت پروفیسر جایا سمانا بھی مستعفی ہوگئے ہیں۔ سری لنکا میں آج ہی حکومت کے خلاف احتجاج کے باعث ملک گیر کرفیولگا دیا گیا تھا۔

غیرملکی خبرایجنسی کے مطابق حکومت کے خلاف مظاہروں کے بعد حکام نے پورے ملک کرفیو لگاکر فوج طلب کرلی تھی۔ اس سے پہلے حکومت حامیوں صدر کے دفتر کے باہر مظاہرہ کرنے والوں پرتشدد کیا۔ اٹھہتر مظاہرین کو زخمی کردیا تھا۔

معاشی بحران کے باعث راجا پاکسے بھائیوں کے خلاف احتجاج بڑھ گیا تھا۔ اور حکومت کے برآمدی بل دینے کیلئے ٖزرمبادلہ نہیں تھا۔ ملک مہنگائی بڑھ گئی تھی۔ اپریل سے احتجاج کرنے والوں کا مطالباتھاکہ صدر اور وزیراعظم پاکسے برادران مستعفی ہوجائیں۔

خیال رہے کہ سری لنکا میں سیاسی بحران اس وقت پیدا ہوا جب رواں برس اکتوبر میں صدر میتھری پالا سری سینا نے وزیرِ اعظم رنیل وکراماسنگے کو اچانک ان کے عہدے سے برطرف کر دیا تھا۔

صدر نے وزیرِ اعظم کو برطرف کرنے کے بعد سابق صدر مہندا راجا پاکسے کو سری لنکا کا نیا وزیرِ اعظم مقرر کردیا تھا۔

بعدِ ازاں ہنگامی طور پر پارلیمنٹ کے اجلاس میں وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کی گئی جس میں 225 اراکین پر مشتمل اسمبلی کی اکثریت نے اس تحریک کو کامیاب بنایا۔

تاہم مہندا راجا پاکسے نے اجلاس کے دوران دعویٰ کیا کہ اسپیکر انہیں محض ’زبانی ووٹ‘ کے ذریعے وزارت عظمیٰ کے عہدے سے ہٹانے کا اختیار نہیں رکھتے جس پر مخالف سیاسی جماعت طیش میں آگئی اور چیمبر کے گرد لڑائی شروع ہو گئی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More