ہراسانی کیس، سندھ ہائیکورٹ نے سی ای او کے الیکٹرک کی درخواست مسترد کردی

کراچی: سندھ ہائیکورٹ نے کے الیکٹرک کی سابق ملازمہ مہرین عزیز کو ہراساں کرنے کا کیس میں محتسب اعلیٰ کے نوٹس کے خلاف مونس علوی اور دیگر کی درخواست مسترد کر دی۔

سندھ ہائیکورٹ میں کے الیکٹرک کی سابق ملازمہ مہرین عزیز کو ہراساں کرنے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ۔ عدالت نے محتسب اعلیٰ کے نوٹس کے خلاف مونس علوی اور دیگر کی درخواست مسترد کردی ۔ عدالت نےسی ای او کے الیکٹرک مونس علوی اور رضوان ڈالیا کو محتسب کی کارروائی میں شریک کرنے کی ہدایت کردی ۔

عدالت کا فیصلہ دیا کہ ہراسگی کا قانون دوران ملازمت خواتین کا تحفظ یقینی بناتا ہے۔مہرین عزیز کا الزام دوران ملازمت ہراسگی کا ہے اسلئے محتسب کو کارروائی کا اختیار ہے۔کے الیکٹرک بین الصوبائی ادارہ نہیں، صوبائی محتسب کے دائرہ کار میں آتا ہے۔

مہرین عزیز نے کے الیکٹرک کے سی ای او مونس علوی و دیگر کے خلاف جنسی حراساں کرنے کی درخواست دائر کررکھی ہے ۔مونس علوی دوران ملازمت مہرین خان کو جنسی و ذہنی طور پر حراساں کرتے رہے ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More