ایسا کیا ہوا جو حکومت کو پٹرول اور بجلی کی قیمتیں کم کرنی پڑیں، شیری رحمان

اسلام آباد:نائب صدر پیپلز پارٹی سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ سولہ فروری سے اٹھائیس فروری کے درمیان ایسا کیا ہوا جو حکومت کو پٹرول اور بجلی کی قیمتیں کم کرنی پڑیں،پٹرول کی قیمتوں میں 12 روپے اضافہ کر کے 10 روپے کم کر کے “خوشخبری” سنائی گئی۔

ایک بیان میں سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے عوامی مارچ کے دبائو میں آ کر پیٹرول اور بجلی کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا گیا ہے، تعجب کی بات ہے حکومت اس کو “ریلیف” کا نام دے رہی ہے،ہوشربا مہنگائی اور بیروزگاری میں یہ بہت ہی معمولی رلیف ہے،جسے عوام نے مسترد کر دیا ہے، ساڑھے تین سال میں جو مہنگائی بڑھی ہے اور اشیاء ضرور یہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے، اس میں کمی کب ہوگی اس نام نہاد رلیف کے پیسے عوام سے ہی لوٹے جائیں گے۔

شیری رحمان نے کہا کہ سالانہ سات سے آٹھ سو ارب روپے کا بوجھ کہاں سے پورا کیا جائے گاوزیراعظم نے اعلان کیا ہے کہ آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے والوں سے پوچھ گچھ نہیں کی جائے گی،کیا یہ سلیکٹڈ احتساب صرف مخالفین کے لئے ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More