آشیانہ اقبال اور رمضان شوگر ملز کیس کی سماعت چھبیس نومبر تک ملتوی

لاہور کی احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال اور رمضان شوگر ملز کیس کی سماعت چھبیس نومبر تک ملتوی کردی۔ عدالت نے شہباز شریف کی ایک روز کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرتے ہوئے ملزمان کو دوبارہ پیش ہونے کا حکم دیدیا۔ نیب پراسیکیوٹر نے موقف اپنایا کہ نیب کے گواہ ریٹائرڈ ہیں چھ ماہ سے آرہے ہیں مگر کوئی کارروائی نہیں ہورہی۔

رمضان شوگر ملز کیس میں حمزہ شہباز احتساب عدالت نمبر پانچ میں پیش ہوئے اور حاضری مکمل کروائی۔ نیب کے دو گواہ نعمت علی اور محمد ایوب بھی عدالت میں پیش ہوئے۔ محمد نواز چوہدری ایڈووکیٹ نے شہباز شریف کی حاضری معافی کی درخواست دائر کرتے ہوئے بتایا کہ اسمبلی اجلاس میں شرکت کے باعث شہباز شریف عدالت پیش نہیں ہوسکتے۔ عدالت سے استدعا ہے کہ شہباز شریف کی موجودگی میں گواہوں پر جرح کی جائے۔

نیب پراسیکیوٹر اسد اللہ ملک نے موقف اپنایا کہ نیب کے گواہ ریٹائرڈ ہیں اور چھ ماہ سے آرہے ہیں مگر کوئی کارروائی نہیں ہورہی۔ ملزمان کے وکیل گواہوں کو ٹی اے ڈی اے دے دیں۔ احتساب عدالت کے جج ملک محمد ساجد علی اعوان نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر گواہوں پر ہر صورت میں جرح کی جائے۔ عدالت نے مہلت کی استدعا منظور کرتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز سمیت گواہوں کو چھبیس نومبر کو دوبارہ طلب کرلیا۔

عدالت نے شہباز شریف کی ایک روز کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرتے ہوئے ملزم بلال قدوائی کی بریت کی درخواست پر نیب کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیا۔ احتساب عدالت عدالت نے آشیانہ اقبال کیس کی سماعت بھی چھبیس نومبر تک ملتوی کرتے ہوئے ملزموں، ان کے پلیڈرز اور گواہوں کو طلب کرلیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More