پاکستانی فلمی انڈسٹری کےممتازترین نام شباب کیرانوی کی39ویں برسی

پاکستان کی فلمی انڈسٹری کے ممتاز ترین نام شباب کیرانوی کی آج انتالیسویں برسی منائی جارہی ہے۔ شباب کیرانوی نے فلم ساز اور ہدایت کاری کے ساتھ ساتھ کہانی نویسی اور شاعری میں بھی اپنا لوہا منوایا۔ پانچ نومبر انیس سو بیاسی کو اس دنیا فانی سے رخصت ہوگئےتھے۔

انیس سو پچیس میں کیرانہ میں پیدا ہونے والے شباب کیرانوی کا اصل نام نذیر احمد تھا۔ انھوں نے تقسیمِ ہند سے قبل جن دو فلموں سے اپنے فنی سفر کا آغاز کیا وہ مکمل نہ ہوسکیں۔ انھوں‌ نے انیس سو پچپن میں بطور فلم ساز جلن کے نام سے فلم بنائی۔۔۔ وہ شاعراور فلمی گیتوں کے خالق بھی تھے۔

شباب کیرانوی نے پاکستانی فلم انڈسٹری کی ترقّی و ترویج میں نہایت اہم اور قابلِ ذکر کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہانی نویسی، نغمہ نگاری، ہدایت کاری اور فلم سازی میں اپنا نام پیدا کیا ان کی مشہور فلموں میں ثریا، مہتاب، ماں کے آنسو، شکریہ، عورت کا پیار، فیشن، آئینہ، ، انسان اور آدمی سرفہرست ہیں۔ شباب کیرانوی نے بہترین ہدایت کاری میں ایوارڈ حاصل کئے جبکہ ان کی متعدد فلموں کو بھی اعزازت سے نوازا گیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More