سپریم کورٹ:مونال ریسٹورنٹ سیل کرنے کا فیصلہ معطل کرنے کی استدعا مسترد

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے مارگلہ ہلز پر بنے ریسٹورنٹ کو سیل کرنے کا اسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کرنے کی استدعا مسترد کردی ہے۔عدالت نے ریسٹورینٹ کی اپیل پر وفاق سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے،سپریم کورٹ میں مونال ریسٹورنٹ سیل کرنے کیخلاف اپیل پر سماعت جسٹس اعجاز الااحسن کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔

مونال ریسٹورنٹ کے وکیل مخدوم علی خان نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سی ڈی اے نے تحریری حکم سے پہلے ہی مونال کو سیل کر دیا ہے. سی ڈی اے اور مونال کا تنازع سول عدالت میں زیر التواء ہے ،اسلام آباد ہائیکورٹ نے مقدمہ زیر التواء ہونے کے باوجود فیصلہ سنا دیا۔

جسٹس مظاہر نقوی نے استفسار کیا کہ کیا اسلام آباد ہائیکورٹ نے مروجہ طریقہ کار سے ہٹ کر فیصلہ کیا ہے؟ وکیل مونال نے کہا کہ شواہد ریکارڈ کیے بغیر ہی اسلام آباد ہائیکورٹ نے فیصلہ جاری کیا. مونال ریسٹورنٹ تو کیس میں فریق ہی نہیں تھا، ہائیکورٹ نے سوموٹو لیتے ہوئے مونال کو سیل کرنے کا حکم دیا۔ مونال ریسٹورنٹ کو سیل کرنے کی استدعا کسی درخواست گزار نے نہیں کی تھی، جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ جو کچھ ہو چکا ہے اسے فی الحال واپس نہیں کر سکتے،عدالت نے سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کر دی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More