سندھ بار کاؤنسل نے ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ غیر آئینی قرار دے دی

کراچی: سندھ بار کاؤنسل نے ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ کو غیر آئینی قرار دیتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان سے درخواستوں پر فیصلہ جلد کرنے کی اپیل کی ہے۔

سندھ بار کونسل کے وائس چیئرمین ذوالفقار جلبانی نے دیگر رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کی ۔اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ ڈپٹی اسپیکر کی جانب سے عدم اعتماد کی تحریک کو مسترد کرنا غیر آئینی ہے جبکہ وزیر اعظم کی جانب سے اسمبلی تحلیل کرنے کا عمل بھی غیر قانونی و غیر آئینی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ بار کاؤنسل نے بھی سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی ہے۔درخواست میں ان کا موقف ہے کہ جب عدم اعتماد کی تحریک آجائے تو اس پر ووٹنگ ہوتی ہے۔ بار کے رہنماؤں کا کہنا تھا کہ نگران وزیراعظم کے لیے چیف جسٹس رٹائرڈ گلزار احمد کا نام لیا جارہا ہے جسٹس ریٹائرڈ گلزار احمد کو یہ عہدہ قبول نہیں کرنا چاہیے ورنہ یہ تاثر جائے گا وہ پی ٹی آئی حکومت کے ساتھ تھے۔

سندھ بار کونسل کے رہنماؤں نے کہا کہ وکلا آئین پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں۔حکومت کے پاس سازش کے ثبوت ہیں تو جمہوری عمل کو ثبوتاز کرنے کے بجائے عوام کے سامنے لائے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More