لیگی رہنما کیپٹن ریٹائرڈ صفدر پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ

لاہور کی مقامی عدالت نے اداروں کے خلاف اشتعال انگیز تقاریر اور لڑائی جھگڑا کرنے پر لیگی رہنما کیپٹن ریٹائرڈ صفدر پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا کہنا ہے کہ چاہتے ہیں ووٹ کی طاقت سے حکومتیں بنیں اور ایسا نظام ہو کہ مہنگائی سے تنگ عوام کو انصاف ملے۔

جوڈیشل مجسٹریٹ بلال منیر وڑائچ نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے خلاف اشتعال انگیز تقایر اور دھمکیاں دینے کے خلاف کیس پر سماعت شروع کی تو لیگی رہنما نے دو مقدمات میں عدالت کے روبرو پیش ہوکر حاضری مکمل کروائی جبکہ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے وکیل نے پولیس سے ضمنی چالان طلب کرنے کی درخواست دائر کردی۔ عدالت نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر سمیت دیگر ملزمان کو بیس نومبر کو فرد جرم کی کارروائی کے لئے طلب کرتے ہوئے استغاثہ سے ضمنی چالان سے متعلق جواب بھی طلب کرلیا ہے۔

عدالتی کارروائی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا کہنا تھا کہ این اے چودہ مانسہرہ کا ایک کیس سپریم کورٹ میں اکیس سال سے زیر التوا ہے۔ اس سارے نظام کو درستگی کی ضرورت ہے۔ عدالتوں پر بہت بوجھ ہے جبکہ حکومت کو چاہیے کہ ججوں کی سہولتوں میں اضافہ کیا جائے۔ لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے ووٹ کو عزت دو کے بیانیے میں یہ بات واضح ہے اور ہم بھی چاہتے ہیں کہ ووٹ کی طاقت سے حکومتیں بنیں اور آئین کا تحفظ ہو۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More