صدارتی نظام کی باتیں سیاسی شوشے کے سوا کچھ نہیں،سعید غنی

کراچی: وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی کا کہنا ہے کہ صدارتی نظام کی باتیں سیاسی شوشے کے سوا کچھ نہیں، عوام عمرانی سرکس کے جوکروں سے تنگ آگئے ہیں، کورونا تیزی سے پھیل رہا ہے تاہم سندھ میں فی الحال لاک ڈائون کا امکان نہیں، تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ محکمہ تعلیم کرے گا، تمام صوبوں کو این سی او سی کے فیصلوں پر عمل درآمد کرنا ہوگا۔

کیمپ آفس کلفٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی کا کہنا تھا کہ صدارتی نظام کی باتیں سیاسی شوشا یے، ملک کا تین سالوں میں جو حشر ہوا اس سے عوام بیزار ہیں، عوامی توجہ اصل مسائل سے ہٹانے کے لیے بلدیاتی ترامیم پر احتجاج کیا جارہا ہے۔

کورونا کے پھیلائو پر سعید غنی کا کہنا تھا کہ کیسز ضرور بڑھ رہے ہیں تاہم محکمہ صحت پر دبائو نا ہونے کے باعث فی الحال لاک ڈائون کا امکان نہیں، تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ محکمہ تعلیم نے کرنا ہے تاہم این سی او سی کی ہدایات تمام صوبوں کو ماننا ہونگی، کورونا کی صورتحال دیکھ کر اگلے فیصلے کیے جائینگے۔

صوبائی وزیر اطلاعات نے کہا کہ ایم کیو ایم لسانی فسادات چاہتی ہے ، سندھ کو پہلے بھی لسانیت سے بہت نقصان ہوا ہے،ٹنڈو الہ یار واقعہ ذاتی دشمنی کا شاخسانہ ہے قاتل گرفتار ہے، مقتول کے ورثا کی مرضی کے تحت ایف آئی آر درج ہوچکی ہے ایم کیو ایم واقعے کو لسانی رنگ نا دے ۔ سعید غنی کا کہنا تھا کہ کسانوں کی فصلیں یوریا کی عدم دستیابی کے باعث برباد ہورہی ہیں، ملک بھر میں کل کسان مارچ کیے، چوبیس جنوری کو کراچی میں بھی احتجاج ہوگا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More