پنجاب کی کم چینی کی ذمہ داری سندھ پر نہیں ڈالی جا سکتی، سعید غنی

کراچی: صوبائی وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نے چینی کی بڑھتی قیمت کا ذمہ دار سندھ حکومت کو قرار دے کر بدقسمتی سے اپنی کم علمی کا ثبوت دیا ہے۔

وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی نے پریس کانفرنس میں کہا کہ سندھ کی چینی اپنے صوبے اور بلوچستان میں بھی یہی چینی استعمال ہوتی ہے ،سندھ میں 15 لاکھ 56 ہزار 268 ٹن چینی پیدا ہوئی۔پنجاب میں 37 لاکھ 46 ہزار ٹن چینی پیدا ہوئی۔پنجاب کی کم چینی کی ذمہ داری سندھ پر نہیں ڈالی جا سکتی ہے۔

سعید غنی نے کہا کہ شوگر مل والوں نے وفاقی حکومت کو بتایا تھا کہ چینی کا کرائسز پیدا ہو سکتا ہے۔وفاقی حکومت نے چینی کی قلت کو ختم کرنے کےلیے کچھ نہیں کیا۔

وزیر اطلاعات سندھ کا کہنا تھا کہ گندم کی طرح چینی بھی سب سے زیادہ پنجاب میں ہی پیدا ہوتی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More