یوکرین پر روس کے حملے چھٹے دن بھی جاری

یوکرین پر روس کی بمباری چھٹے روز بھی جاری ہے۔ تازہ حملے میں ستر یوکرینی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔ جبکہ روسی فوج کا گاڑیوں پر مشتمل تقریباً 60 کلومیٹر طویل قافلہ دارالحکومت کیف کی جانب بڑھ رہا ہے۔

یوکرین کے حکام نے تصدیق کی ہے کہ یوکرین کے ایک فوجی اڈے پرروسی حملےمیں ستر یوکرینی فوجی ہلاک ہوگئےہیں۔ یوکرین کے حکام کے مطابق سومی شہر میں اوختیرکا کے ایک فوجی اڈے پر حملہ ہوا ہے۔ جس کے نتیجے میں یوکرین کا فوجی یونٹ تباہ ہو گیا ہے۔

یوکرین کا دوسرا بڑا شہر خارکیف بھی روسی حملوں کی زد میں آگیا۔ یوکرینی حکام کا کہنا تھا کہ یوکرین کے دوسرے شہر خارکیف پر روسی میزائل حملوں میں درجنوں افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ سوشل میڈیا پر خارکیف میں راکٹوں سے حملے کی ویڈیوزشیئر کی گئی ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کےمطابق یوکرین میں روس کی پچھتر فیصد افواج موجود ہیں۔ روسی گاڑیوں کا ایک بہت بڑا قافلہ جو تقریباً چالیس میل تک پھیلا ہوا ہے، یوکرین کے دارالحکومت کیف کی جانب پیش قدمی کر رہا ہے۔

یوکرین نے 5700 روسی فوجی مارنے200 سے زائد روسی فوجیوں کو یرغمال بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔ یوکرین حکام کے مطابق روس کے 198 ٹینک، 29 طیارے، 846 بکتر بند گاڑیاں اور 29 ہیلی کاپٹر تباہ کیے جا چکے ہیں۔

دوسری جانب روس نےیوکرین پر حملے کے دوران کم از کم دس روسی فوجیوں کی ہلاکت کا اعتراف کرلیا ہے۔

اقوامتحدہ کا کہناہے کہ تنازعے کومذاکرات کے ذریعے حل کیاجائے۔ جبکہ عالمی عدالت کے وکیل نےکہاہے کہ روس کے جنگی جرائم کی تحقیقات کی جائے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More