یوکرین میں جنگی جارحیت کے خلاف روسی شہری سڑکوں پر نکل آئے

یوکرین میں جنگی جارحیت کے خلاف روسی شہری سڑکوں پر نکل آئے، روسی دارالحکومت ماسکو سمیت سینٹ پیٹرزبرگ اور دیگر شہروں میں مظاہرے پھوٹ پڑے۔

خبر ایجنسی کے مطابق روس میں جنگ کی مخالفت کرنے والے چار ہزار تین سو سے زائدمظاہرین کو حراست میں لے لیا گیا،ہزاروں مظاہرین نے”سے نو ٹو وار”کے نعرے لگائے،دوسری جانب روس نےانسانی ہمدردی کی بنیاد پر انخلا کے لیے حملے روکنےاور نئی راہداریاں کھولنے کا اعلان کیاہے۔

روس کی وزارت دفاع کے مطابق اطلاق مقامی وقت کے مطابق صبح دس بجے سےہوگا،جس میں دارالحکومت کیف کے ساتھ ساتھ خارکیف، ماریوپل اور سومی سے انخلا کے راستے بنائے گئے ہیں،یہ تمام شہر اس وقت روسی حملوں کی زد میں ہیں،اقوام متحدہ کے حکام کےمطابق روس کے یوکرین پر حملے کے بعد سے اب تک کم از کم تین سو چونسٹھ یوکرینی ہلاک اورسات سو انسٹھ زخمی ہو چکے ہیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More