جامعہ اردو عبدالحق کیمپس کے زیرِ اہتمام آگاہی سیشن کا انعقاد

کراچی :وفاقی جامعہ اردو عبدالحق کیمپس میں وفاقی وزارت اطلاعات کے کمیشن ارکان کی جانب سے آگاہی سیشن کا انعقاد کی گیا۔ شعبہ ابلاغ عامہ کےتحت ہونے والے آگاہی سیشن میں اساتذہ اور طلباء کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔

طلباء سے بات کرتے ہوئے کمیشن ارکان کا کہنا تھا کہ ملک میں کرپشن کے خاتمے اور شفافیت کو برقرار رکھنے میں معلومات تک رسائی کے قانون کے تحت عوام کو جاننے کا بنیادی حق فراہم کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جامعہ اردو عبدالحق کیمپس میں شعبہ ابلاغ عامہ کے تحت وفاقی وزارت اطلاعات کے کمیشن ارکان کا طلبہ میں آگاہی کے حوالے سے سیشن منعقد کیا گیا ،سیشن کا آغاز باقاعدہ تلاوت کلام پاک سے کیا گیا ۔

سیشن سے خطاب کرتے ہوئےکمیشن ارکان محمد اعظم، زاہد عبداللہ اور فواد ملک کا کہنا تھا کہ ملک میں کرپشن کے خاتمے اور شفافیت کو برقرار رکھنے میں معلومات تک رسائی کا قانون 2017بنیادی کردار ادا کرسکتا ہے،جس میں تمام حکومتی اداروں کو شہریوں کے سامنے جواب دہ بنایا گیا ہے۔ تمام سرکاری ادارے آئینی طور پر پابند ہیں کہ وہ مطلوبہ معلومات شہریوں کو فراہم کریں۔ آئین میں آرٹیکل 19-Aکے تحت عوام کو جاننے کا بنیادی حق فراہم کیا گیا ہے۔

کمیشن ارکان کا کہنا تھا کہ گذشتہ تین برسوں میں 1700سے زائد درخواستیں ملی ہیں جن میں سے بڑی تعداد کو حل کیا گیا اور ان پر کمیشن نے احکامات بھی جاری کئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نوجوان نسل اور طلبہ ہمارے ملک کا مستقبل ہیں ان کو چاہیے کہ وہ سماجی مسائل پر سوال اٹھائیں اور حکومتی اداروں اور اہلکاروں سے سوال پوچھیں۔ ٹیکس پر چلنے والے تمام حکومتی ادارے شہریوں کو جواب دہ ہیں اس ملک کے حقیقی مالک یہاں کے عوام ہیں جن کے اربوں روپے کے ٹیکس سے یہ حکومتی نظام اور ادارے چل رہے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ طلبہ اپنے ریسرچ کے دوران حکومتی وسائل کہاں، کیسے اور کس پر خرچ ہوتے ہیں اس کی معلومات طلب کرسکتے ہیں۔اس کے لیے ان کو پہلے متعلقہ محکمے کو اپنا سوال ای میل کرنا ہوگا تاہم اگر دس روز میں جواب نہ ملے پھر ا س کے خلاف ہماری وفاقی وزارت اطلاعات کے کمیشن کی ویب سائٹ کے ذریعے اپیل کر سکتے ہیں اور کمیشن اس اپیل کا فیصلہ 60روز میں کرنے کا پابند ہے۔

مقررین نے طلبہ کو بتایا کہ ملک سے کرپشن کے خاتمے اور شفافیت کیلئے یہ قانون کلیدی کردار ادا کررہاہے۔ طلبہ سمیت تمام عام شہریوں میں اس کی آگاہی فراہم کرنا ہم سب کا فرض ہے۔

کمیشن ارکان کا مزید کہنا تھاکہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے توشہ خانہ کیس میں بھی کمیشن معلومات فراہم کرنے کا حکم دے چکا ہے لیکن حکومت اس معاملے پر اسلام آباد ہائی کورٹ میں کیس کر چکی ہے جو زیر سماعت ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاک فوج کے فلاحی اداروں کے منصوبوں کے بارے میں عام شہری معلومات کیلئے سوال اٹھا سکتے ہیں۔

تقریب میں شعبہ ابلاغ عامہ کی سربراہ ڈاکٹر مسرور خانم، ڈاکٹر زآزادی فتح، ناصر محمود، طاہرہ طارق، ثمرین فیصل، سعید عثمانی اور دیگر بھی موجود تھے۔آخر میں وزارت اطلاعات کمیشن کے ارکان نے طلبہ اور اساتذہ کے سوالات کے جوابات بھی دیئے ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More