منیشات برآمدگی کیس:رانا ثنا اللہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

لاہور: منیشات برآمدگی کیس میں پراسیکیوشن کی عدم دستیابی کے باعث رانا ثنا اللہ پر آج بھی فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔ عدالت نے رانا ثنااللہ سمیت دیگر ملزموں کو انیس فروری کو دوبارہ طلب کرلیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ حکومت نے کرونا فنڈ کا ایک ارب روپیہ اپنی گالم گلوچ بریگیڈ میں تقسیم کردیا۔۔ مسلم لیگ نون سمیت تمام جماعتیں تہتر کے آئین پر متفق ہیں۔

منیشات برآمدگی کیس میں سابق وزیر قانون رانا ثنااللہ انسداد منشیات کی خصوصی عدالت کے جج محمد نعیم شیخ کے روبرو پیش ہوئے پراسیکیوٹرز کی عدم حاضری پر رانا ثنا اللہ کے وکیل فرہاد علی شاہ ایڈووکیٹ نے موقف اپنایا کہ پراسیکیوشن کیس کیلئے سنجیدہ نہیں۔ عدالت نے سماعت ملتوی کرتے ہوئے رانا ثنااللہ سمیت دیگر ملزموں کو انیس فروری کو دوبارہ طلب کرلیا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ حکومت قوانین میں ترمیم لارہی ہے جبکہ فروغ نسیم طاغوتی طاقتوں کے بڑے پرانے ایجنٹ ہیں۔ لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ لاہور میں دھماکہ ہوا تو وزیراعظم اپنی گالم گلوچ بریگیڈ کے ساتھ وزیراعظم ہاؤس میں بیٹھے تھے۔ رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ نون سمیت تمام جماعتیں 73 کے آئین پر متفق ہیں۔ ملک میں صدارتی نظام سے کوئی بھلائی نہیں ہوئی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More