پی ٹی آئی کو 5 دنوں میں تمام اکاؤنٹس کی تفصیلات جمع کرانے کی ہدایت

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو 5 دنوں میں تمام اکاؤنٹس کی تفصیلات جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔ فارن فنڈنگ کیس کی سماعت کے دوران چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیے کہ ہمارے پاس اتنا وقت نہیں ہے کہ ایک ایک ٹرانزیکشن کو دیکھیں۔ اکاونٹس کی تفصیلات جمع کرانے کے بعد دو دن میں پی ٹی آئی وکیل حتمی دلائل مکمل کریں۔

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت کی۔ پی ٹی آئی کے مالیاتی ماہر نجم شاہ نے بریفنگ دیتے ہوئے بنچ کو بتایا کہ انفرادی بینک اکاؤنٹس کا ریکارڈ اسکروٹنی کمیٹی کو جمع نہیں کرایا جاسکا، سینٹرل فنانس کمیٹی ایسے بینک اکاؤنٹس کا ریکارڈ حاصل نہیں کرسکی۔رپورٹ میں رقم کو بار بار دہرایا گیا ہے،26 بینک اکاؤنٹس کی بات کی جاتی ہے، بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات ہی نہیں دی گئیں۔ٹرانزیکشن ہمارے ظاہر کردہ بینک اکاؤنٹس میں ہی آئی ہیں۔

چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ یہاں کیس کو قانونی نکتۂ نظر سے ثابت کرنا ہے، ہر چیز کی تفصیلات میں نہیں جایا جاسکتا، صاف بتائیں آپ کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں۔ اگر مزید تفصیلات کی گہرائی میں جائیں گے تو اہم چیزیں رہ جاتی ہیں، ہم سماعت کے بعد دونوں پارٹیز کے دلائل کا موازنہ کرتے ہیں۔ پی ٹی آئی وکیل انور منصور نے کہا کہ اسکروٹنی کمیٹی رپورٹ کے مطابق پی ٹی آئی کے امریکا کے اکاؤنٹس کی تفصیلات نہیں دی گئیں، اسکروٹنی کمیٹی صرف پاکستان کے اکاؤنٹس کی تفصیلات دیکھ سکتی تھی۔

نجم شاہ نے نے کہا کہ ہم سب انفارمیشن جمع کر کے کمیشن میں جمع کروا دیتے ہیں جس پر 4 سے 5 دن لگیں گے۔ چیف الیکشن کمشنر نے ہدایت دی کہ 5 دن تک تمام اکاؤنٹس کی تفصیلات لکھ کر جمع کروادیں۔ درخوات گزار کے وکیل احمد حسن نے جرح کرتے ہوئے کہا کہ ان کو اپنے اکاؤنٹس کی تفصیلات بتانے کے لیے 5 منٹ لگنے چاہئیں، یہ 5 دن کا کہہ رہے ہیں۔جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ درست فیصلے کے لیے دونوں کے موقف کو سننا ضروری ہے، جہاں 8 سال انتظار کیا 5 دن اور کرلیں۔

چیف الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو ہدایت کی کہ اکاونٹس کی تفصیلات جمع کرانے کے بعد دو دن میں پی ٹی آئی وکیل حتمی دلائل مکمل کریں۔ کیس کی مزید سماعت 7 جون تک ملتوی کر دی گئی۔ سماعت کے بعد الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے درخواست گزار اکبر ایس بابر کا کہنا تھا کہ 8 سال بعد اب امید لگ رہی ہے کہ جلد ہی کیس پر فیصلہ محفوظ ہو جائے گا۔عمران خان کے اسٹیبلشمنٹ سے متعلق نازیبا بیان کے بارے میں اکبر ایس بابر کا کہنا تھا کہ عمران خان جس شاخ پر بیٹھا ہے اسے ہی کاٹ رہا ہے۔ ادارے نوٹس لیکر عمران خان کو گرفتار کریں اور کاروائی کریں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More