صدر کا حکومت کی تبدیلی کی مبینہ سازش کی تحقیقات پر زور

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی نےمبینہ سازش کے حوالے سے سابق وزیراعظم عمران خان کے خط کا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ چیف جسٹس معاملے کی تحقیقات اورسماعت کیلئے بااختیارعدالتی کمیشن قائم کریں۔ حکومت کی تبدیلی کی مبینہ سازش کی مکمل تحقیقات کرنے کی ضرورت ہے۔

صدر مملکت کا کہنا ہے کہ انہوں نے سائفرکی رپورٹ پڑھی جس میں ڈونلڈ لو کے بیانات شامل ہیں جن میں خاص طور پرعدم اعتماد کی تحریک کا ذکر کیا گیا۔

صدرعارف علوی نے کہا کہ عمران خان کا خط وزیراعظم پاکستان اورچیف جسٹس کو بھیج رہا ہوں۔ پاکستانی عوام کو وضاحت دینے اور معاملے کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے حالات پر مبنی شواہد ریکارڈ کرنے کی ضرورت ہے۔

سائفر میں ڈونلڈ لو کے ساتھ پاکستانی سفارت خانے میں ہونے والی ملاقات کی باضابطہ سمری موجود تھی۔ قومی سلامتی کمیٹی کے دو اجلاسوں میں توثیق کی گئی کہ ڈونلڈ لوکے بیانات پاکستان کے اندرونی معاملات میں ناقابل قبول اور صریح مداخلت کے مترادف ہیں۔

پاکستان نے بجا طور پر ڈی مارش جاری کیا،دھمکیاں خفیہ اورظاہراً دونوں ہو سکتی ہیں۔ ایک خودمختار،غیوراور آزاد قوم کے وقار کو شدید ٹھیس پہنچی،لمبے عرصے بعد خفیہ دستاویزات جاری کرنے تک ملکوں کو شدید نقصان پہنچ چکا ہوتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More