آبادی میں اضافہ اقتصادی ترقی پر اثرانداز ہو رہا ہے، صدر مملکت

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا ہے کہ خاندانی منصوبہ بندی اور بچوں کی پیدائش میں مناسب وقفہ رکھنے کی ضروت ہے ۔ اسلام زور دیتا ہے کہ مائیں اپنے بچوں کو دو سال تک اپنا دودھ پلائیں۔ بچوں کو دو سال تک ماں کا دودھ پلانے سے بچوں میں ذہنی و جسمانی کمزوری ، غذائیت کی کمی پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی آبادی میں تیز اضافے پر میڈیا نمائندوں کے ساتھ فکری نشست کاانعقاد کیاگیا۔اس موقع پر معاون خصوصی صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ آبادی میں بے ہنگم اضافہ قومی سلامتی کا مسئلہ بن سکتا ہے۔ آبادی میں اضافےسے نئی نسل کو تعلیم اور صحت کی سہولیات کی کمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔

معاون خصوصی صحت نے کہاکہ رہنمائی کی کمی ، مانع حمل مصنوعات کی عدم دستیابی کی وجہ سے پاکستان میں 40 لاکھ ان چاہے حمل ہوتے ہیں۔پارلیمانی سیکرٹری ، نوشین حامد کی آبادی کے انتظام سے متعلق پالیسی سازی پر پارلیمانی کاکس کے کردار پر روشنی ڈالی۔نشست کے دوران صدر نے میڈیا کے ذریعے بڑے پیمانے پر آگاہی کے حوالے سے صحافیوں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔

صدر مملکت نے کہاکہ آبادی میں تیزی سے اضافے سے ملک کی سماجی و اقتصادی ترقی پر اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ صدر مملکت نے کہاکہ لوگوں میں شعور بیدار کرنے کے لیے قومی سطح پر ایک وسیع البنیاد مہم چلانے کی ضرورت ہے۔ میڈیا خاندانی منصوبہ بندی پر رائے عامہ ہموار کرنے ۔ رویوں میں تبدیلی لانے میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے، ٹیلی ویژن ٹاک شوز ، ڈرامہ سیریلز میں آبادی کے مسئلے پر توجہ سود مند ثابت ہو سکتی ہے۔

صدر مملکت نے کہاکہ آبادی کے مناسب انتظام کیلئے پارلیمانی ارکان کے فعال کردار ، پختہ سیاسی عزم کی ضرورت ہے ، عوامی آگاہی کیلئے آبادی میں اضافے پر پارلیمانی کاکس کی کاروائی کو مناسب طریقے سے اجاگر کیا جائے۔ میڈیا پبلک سروس پیغامات کے ذریعے ملک میں آبادی کی تشویشناک شرح کے بارے میں بیداری پیدا کرے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More