وزیراعظم گیم ہار چکا مگر پچ پر لیٹ کر رو رہا ہے، بلاول

اسلام آباد: پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عدم اعتماد کومتنازعہ نہ بنایا جائے۔ وزیراعظم سیف ایگزٹ، بیک ڈور ڈھونڈنے کے بجائے عدم اعتماد کا مقابلہ کرے۔ اگر عدم اعتماد پراسیس نہ ہوا تو غیرجمہوری پراسیس ہو گااور اس کے بعد پھر بحران کا خدشہ ہے۔ وزیراعظم نے خود کو بچانے کے لیے قومی سلامتی کا فورم استعمال کیا۔

اسلام آابد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے پی پی چیئر مین کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان میں معاشی بحران ہے جس کی وجہ وزیراعظم ہے۔ ہم سب کا فرض ہے کہ پاکستان کو مشکلات سے نکالیں۔کل وزیراعظم نے بطور قائد اپنی تقریر میں ایک بھی ذمہ داری ادا نہیں کی۔ ملک کو چلانا کوئی کرکٹ کا کھیل نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ خط کا معاملہ کوشش ہے کہ پاکستان کے عوام کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگایا جائے۔ پاکستان دنیا بھر میں تنہائی کا شکار ہوچکاہے۔ وزیراعظم کے دورہ روس سے پہلے ہم شہبازشریف کے گھر گئے تھے۔وزیراعظم سے پوچھتے ہیں کیا ہمیں پہلے سے پتا تھا آپ نے روس جانا اوریہ عالمی سازش تھی؟ ۔گزشتہ تین سال سے ہم سیاسی جدوجہد میں شریک ہیں۔عمران خان کو جھوٹ بولنے کی عادت ہے، اتنا ہی جھوٹ بولنا چاہیے جو سچ مانا جائے۔

انہوں نے کہا کہ فیصلہ عمران خان نے کرنا ہے کہ عدم اعتماد تحفہ ہے یا عالمی سازش۔ ہم نے وزیراعظم کیخلاف جمہوری طریقہ اختیار کیا۔ یہ جھوٹ کی بنیاد پرعوام کوورغلانا چاہتے ہیں۔ مشکل حالات میں پاکستان کو کرائسزسے نکالنا ہوگا۔ آئینی بحران،تصادم کا خطرہ پیدا نہیں کرنا چاہیے۔ وزیراعظم گیم تو ہارچکا ہے لیکن اس کے باوجود پچ پر لیٹ کر رو رہا ہے۔ وزیراعظم جاتے جاتے خارجہ پالیسی اور اداروں پرحملہ آورہیں۔

بلاول بھٹو زردای نے کہا کہ اسپیکر صاحب! وقت آگیا سب ہوش کے ناخن لیں۔ عمران کے رونے،دھونے کی وجہ سے پاکستان کواس قسم کے خطرے میں نہیں ڈال سکتے۔ عمران کی ہر کوشش کا جواب دینا جانتے ہیں۔اتوار والے دن ووٹنگ ہو گی۔ امید کرتے ہیں کوئی غیرجمہوری قدم نہیں اپنایا جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More