پاکستان کی آزادی آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھ دی گئی، شہباز شریف

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے حکومت کی معاشی پالیسیوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک ہاتھ میں کشکول دوسرے میں ایٹمی پروگرام دونوں میں سے ایک چھوڑنا ہوگا۔ آگ اور پانی ایک ساتھ نہیں چل سکتے۔

قومی اسمبلی میں فنانس ترمیمی بل 2021 پر اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کا بحث کا آغاز کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا اسٹیٹ بینک آئی ایم ایف کی تحویل میں دیدیا گیا۔ ہماری جو آزادی رہ گئی تھی وہ بھی ختم ہوگئی۔74 سال میں مختلف حکومتیں آئیں جو بلینڈر اب ہونے جا رہا ہے 74 سال میں نہیں ہوا۔

شہباز شریف نے ناقص معاشی پالیسیوں پر حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی آزادی کو سلب اور معیشت کوآئی ایم ایف کے پاس گروی رکھ دیا گیا۔منی بجٹ سے ہم زنجیروں میں جکڑےجائینگے۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ ہماری حکومت کی تاریخ میں گردشی قرضہ 11 سو ارب تھاجو 2700 ارب پہنچ چکا ہے۔ افسوس پھر چور اور ڈاکو کے نعرے لگتے رہےمگر یہی کہتے تھے کہ جب مہنگائی ہوتی ہے تو حکمران چور ہوتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More