پاکستان کو مذہبی شدت پسندی سے خطرہ ہے، نورالحق قادری

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نور الحق قادری نے کہا ہے کہ پشاور میں پادریوں کے قتل یا سانحہ سیالکوٹ جیسے واقعات کے پیچھے پاکستان دشمن اور شدت پسندوں کا ہاتھ ہوتا ہے۔ پاکستان کو ہر قسم کی مذہبی اور لسانی شدت پسندی سے پاک کرکے رہیں گے۔

پیغام پاکستان تصوف کانفرنس سے خطاب میں نورالحق قادری کا کہنا تھا کہ صوفیا کرام کے پیغامات ہمیشہ امن اور یکجہتی کی مثال رہی ہیں۔ بدقسمتی سے صبر اور امن کی باتیں آج کل ہمارے معاشرے میں کم ہی نظر آتی ہیں۔ معاشرے کی ترقی کا راز امن میں چھپا ہوا ہوتا ہے۔ امن و امان کو بحال کرنے کے لئے دینی علوم اور دین اسلام کی روایات کی پیروی کرنا ہوگا ۔

نور الحق قادری نے کہا کہ اللہ نے اس ملک سے بڑا کام لینا ہے۔ پاکستان قیامت کی صبح تک آباد رہے گاتاہم خدانخواستہ پاکستان کو کوئی نقصان ہوا تو مذہبی تشدد یا لسانی تشدد سے ہوگا۔پاکستان کے لئے مذہبی شدت پسندی خطرناک ہے۔علما اور صوفیا سے شدت پسندی کے لئے آگاہی اجاگر کرے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ عمران خان نے بین الااقوامی سطح پر اسلامی فوبیا کے خلاف بھرپور اواز اٹھائی۔ صدر پیوٹن بھی کہنے لگا ہے کہ کسی کے نبی کو برا بھلا کہنا اظہار ازادی نہیں جبکہ دو دن قبل کنیڈا کے وزیر اعظم نے بھی اسلام مخالف سوچ کی نفی کی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More