ہمارے معاشی ماہرین طالبان حکومت کی مدد کریںگے، وزیر خارجہ

کابل: وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ ہمیں افغانستان میں ٹی ٹی پی اور بی ایل اے کی موجودگی پر تحفظات ہیں تاہم افغان عبوری قیادت نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ کوئی شک نہیں ہونا چاہیے کہ افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغانستان کے ایک روزہ دورے کے بعد دفتر خارجہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ افغان قیادت کے ذہن میں کوئی رکاوٹ نہ تھی۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی ۔وزیر خارجہ نے بتایا کہ دورہ کابل میں افغان حکام سے ملاقاتیں ہوئیں جبکہ عبداللہ عبداللہ اور گلبدین حکمت یار سے فون پر گفتگو ہوئیں۔ اگلے چند روز میں ایک اعلیٰ وفد افغانستان سےپاکستان آئے گا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ابھی کسی نے افغان حکومت کو تسلیم نہیں کیا جبکہ افغانستان کے 9.5 ارب ڈالر منجمد ہیں۔ ہم نے ان کو بتایا کہ کونسے اقدامات کرنے سے دنیا انہیں تسلیم کرے گی۔بین الاقوامی برادری کی توقعات سے متعلق انہیں بتایا۔ انہیں وسیع البنیاد حکومت، خواتین حقوق اور تعلیم اور نو سیف ہیونز کے حوالے سے آگاہ کیا۔ ایسے سب اقدام کریں گے تو دینا انہیں تسلیم کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا اکیلے تسلیم کرنا ان کے لیے فائدہ مند نہ ہوگا۔ افغانستان کو تنہا نہ کیا جائے اور ہم اس کوشش میں کامیاب ہیں۔ طالبان کی چین، روس، ایران میں بات چیت ہورہی ہے جو کہ افغانستان کے لیے اچھی ہے اس حوالے سے مزید پیش رفت ہورہی ہے ۔تاجک نمائندوں کی طالبان کی بات کروائیں گے تاکہ خطہ کسی بحران کی طرف نہ جائے۔

شاہ محمود کا مزید کہنا تھا کہ طالبان اور روس کے تعلقات میں بہتری آئی ہے لیکن وہ اپنے ممالک میں انتہاپسند گروپس کے حوالے سے تشویش کا شکار ہیں۔ سیکیورٹی تعلقات کو مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔طالبان کو سوچنا چاہیے کہ پڑوسی ممالک کے ساتھ کیسے تعلقات کو بہتر بنا سکتے ہیں۔ چند ہفتوں میں دہشت گردی کی زد میں آکر شہادتیں ہوئیں جس پر طالبان نے مکمل تعاون کا یقین دلایا کہ ایسے لوگوں کو روکا جائے گا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان پانچ ارب روپے کی امدادی اشیا افغانستان کو فراہم کریں گا جن میں ادویات اور خوراک شامل ہوگی۔ افغانستان کی مالی امداد کیلئے افغانستان کی سبزیاں اور پھلوں کو ڈیوٹی فری کر دیا ہے۔ ہمارے معاشی ایکسپرٹ انکے ماہرین کے ساتھ بیٹھ کر مدد کریں گے۔افغانیوں کے لیے گیٹ پاس ختم کر دیا ہے اور طبی بنیادوں پر آنیوالے کیلئے ویزا آن آئراول دے دیا جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More