عمر ایوب کی وفاقی وزیر داخلہ کے خلاف کارروائی کی درخواست

اسلام آباد:تحریک انصاف کے رہنما عمر ایوب کا کہنا ہے کہ رانا ثناء اللہ، سی پی او راولپنڈی اور آئی جی پنجاب کے خلاف قانونی کارروائی کیلئے درخواست دے رکھی ہے اگر کاروائی نہ ہوئی تو سپریم کورٹ تک جاؤں گا۔

سابق وفاقی وزیر عمر ایوب میڈیکولیگل ( ایم ایل آر) کے لئے ہولی فیملی اسپتال پہنچ گئے ۔میڈیا نمائندوں سے بات چیت میں عمرایوب خان کا کہناتھا کہ ٹی ایچ کیو اسپتال حسن ابدال سے میڈیکل کی دستاویزات ہولی فیملی آنی تھیں ۔جہاں

میرے کان کے پردے اور سر کا سی ٹی اسکین یونا تھا مگر کانسٹیبل تیمور دستاویزات سمیت صبح دس بجے سے غائب ہے۔اور تمام دستاویزات کے ساتھ اپنے گھر چلا گیا جسکی اطلاع میں نے ڈی پی او اٹک کو دیدی ہےاس تمام معاملے پر ٹویٹ کی میڈیا پر بیان دیا تین بج چکے ہیں ابھی تک پولیس کا کوئی پتہ نہیں۔

عمر ایوب کا کہنا تھا کہ ایک سادہ سا میڈیکو لیگل کا عمل ہے جس میں ٹال مٹول سے کام لیا جارہا ہے۔ مجھے میڈیکل کے لئے حسن ابدال سےراولپنڈی ریفر کیا گیا۔آزادی مارچ کے دوران پولیس نے بغیر کسی وارننگ کے ہمارے قافلے پر لاٹھی چارج کیا آنسوگیس کے شیل پھینکےانصاف کیلئے سپریم کورٹ سمیت ہر حد تک جاؤنگا، یہ صرف میرا کیس نہیں برہان انٹرچینج پر میرے سینکڑوں ساتھیوں کو شیلنگ کا نشانہ بنایا گیا۔

عمر ایوب نے کہا کہ میرے کان کا پردہ متاثر ہوا ہے جسم پر متعدد چوٹیں آئی ہیں اور میری ٹانگ بھی زخمی ہے کمر پر بھی مارا گیا۔وزیرداخلہ رانا ثناء اللہ ایک نامور مجرم ہے اسکے اپنے پارٹی کے لوگ کہتے ہیں کہ اس نے تیرہ قتل کئے ہیں۔رانا ثناء اللہ منشیات فروشی میں بھی ملوث ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More