سیاسی صورتحال پر نوٹس، سپریم کورٹ کا لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سیاسی حالات پر لیے گئے نوٹس پر لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

آج ملکی سیاسی صورتحال پر از خود نوٹس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سماعت کیا۔ بنچ میں جسٹس اعجازالاحسن اور جسٹس محمدعلی مظہر شامل تھے۔ سماعت سپریم کورٹ کے کمرہ نمبر ایک میں ہوئی۔

عدالت نے ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ کیخلاف درخواست پر ابتدائی موقف سننے کے بعد اٹارنی جنرل سمیت سیکرٹری داخلہ اور دفاع کو نوٹس جاری کر دیا۔

سپریم کورٹ نے واضح ہدایات دیں کہ اسمبلی میں جو ہوا اس پر ججز نےنوٹس لینےکافیصلہ لیا تمام ریاستی ادارے کوئی غیرقانونی قدم نہ اٹھائیں۔ امن وامان کی صورتحال خراب نہیں ہونی چاہیے۔ تمام سیاسی جماعتیں امن وامان یقینی بنائیں۔

عدالت نے سیکریٹری داخلہ اور دفاع کو نوٹس جاری کردیا۔ سپریم کورٹ بار کی درخواست میں فریق تمام سیاسی جماعتوں کو نوٹس جاری کردیا۔ کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی گئی۔

سپریم کورٹ کا سیاسی حالات پر لئے گئے ازخودنوٹس پر لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اور پیر کے روز 5 رکنی بنچ دن ایک بجے کیس کی سماعت کرے گا۔

آرٹیکل63 اےکی تشریح کے ریفرنس پر کل ہونے والی سماعت مؤخر کر دی گئی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More