نور مقدم قتل کیس، ملزم ظاہر جعفر جسمانی اور ذہنی طور پر مکمل فٹ قرار

اسلام آباد: نور مقدم قتل کیس میں اہم پیش رفت سامنے آگئی۔ اڈیالہ جیل حکام نے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کو جسمانی اور ذہنی طور پر مکمل فٹ قرار دے دیا ہے۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عطا ربانی نے نور مقدم قتل کیس کی سماعت کی۔ دوران سماعت ملزم ظاہر جعفر کو پولیس کی جانب سے اسٹریچر پر پیش کیا گیا۔ مرکزی ملزم کے والد ذاکر جعفر کے وکیل بشارت اللہ نے تفتیشی آفیسر عبدالستار پر جرح کی۔ جرح کے دوران تفتیشی افسر نے وکیل بشارت اللہ کے سوالات کے جواب دیئے اور پولیس ریکارڈ کے مطابق سارا واقعہ دہرایا۔

جرح مکمل ہونے کے بعد اڈیالہ جیل حکام کی طرف سے ملزم ظاہر جعفر کی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کردی گئی جس میں جیل اسپتال کے ڈاکٹرز نے ملزم ظاہر ذاکر جعفر کو مکمل طور پر فٹ قرار دیدیا۔ڈاکٹرز ککے مطابق ملزم کا بہت دفعہ میڈیکل کیا گیا ہے جبکہ ملزم کا ماہر نفسیات نے بھی مکمل معائنہ قرار دیکر اسے فٹ قرار دیا ہے۔ عدالت نے کیس کی سماعت 24 جنوری تک ملتوی کر دی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More