نیپرا کا بند پاور پلانٹس پرشدید تحفظات کا اظہار

اسلام آباد:ملک میں جاری غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر نیپرا ہیڈ کواٹرز میں سماعت کی گئی ۔ نیپرا نے آئل کی عدم دستیابی اور فنی خرابی کے باعث بند پاور پلانٹس پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے ۔

ملک میں جاری غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر نیپرا ہیڈ کواٹرز میں سماعت ہوئی جس میں آئل کی عدم دستیابی اور فنی خرابی کے باعث بند پاور پلانٹس کے سربراہان، سی پی پی اے جی اور این پی سی سی کے عہدے داران نے شرکت کی ۔

نیپرا اعلامیہ کے مطابق نیپرانے آئل کی عدم دستیابی اور فنی خرابی کے باعث بند پاور پلانٹس پر شدید تحفظات کا اظہار کیا۔دوران سماعت پاور پلانٹس کے سربراہان نے فنڈز کی عدم دستیابی پر سی پی پی اے جی کے خلاف شکایات کے انبار لگا دیئے۔سربراہان پاور پلانٹس نے کہا کہ ہمارے پاس آئل کی خریداری اور پلانٹس کی مرمت کروانے کے پیسے نہیں ہیں۔

سربراہان پاور پلانٹس کا کہنا تھا کہ اگر سی پی پی اے جی ہمیں بروقت پیسے فراہم کر دے تو دونوں مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ نیپرا نے سی پی پی اے جی کو پاور پلانٹس کو جلد از جلد پیسے فراہم کرنے کا لائے عمل بنانے کی ہدایت کی ۔ اتھارٹی نے این پی سی سی کو بھی اپنی پلاننگ میں موسم کی شدت کے مطابق نظر ثانی کی ہدایت دی ۔

اتھارٹی نے نیپرا، این پی سی سی اور پرائیویٹ سیکٹر پر مشتمل کمیٹی بھی تشکیل دی ۔کمیٹی این پی سی سی کو روزانہ کی بنیاد پر بہتر پلاننگ میں معاونت فراہم کرے گئی۔نیپرا نے این پی سی سی کو ہدایت دی کہ وہ گدو پاور پلانٹ کو فوری طور پر اوپن سائیکل پر چلا کر سسٹم میں 260 میگا واٹ شامل کرے۔اس سے صارفین کو لوڈ شیڈنگ سے کچھ ریلیف مل سکے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More