بجلی کی قیمت میں فی یونٹ 7روپے 91پیسے کا اضافہ

اسلام آباد: نیپرا نے بجلی کی قیمت میں فی یونٹ سات روپے اکیانوے پیسے کا اضافہ کردیا۔ نیپرا نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے مختلف ریونیو کے تقاضوں کی مد میں ہر کمپنی کے الگ ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن کے لاسز کا تعین کر دیا ۔

نیپرا اعلامیہ کے مطابق تعین کیا گیا ٹیرف وفاقی حکومت کو نوٹیفیکیشن کے لئے بھیج دیا گیا ہے، نیپرا ایکٹ کے مطابق وفاقی حکومت تمام ڈسکوز کے لیے یکساں ٹیرف کے تعین کے لیے درخواست دائر کرنے کا حق رکھتی ہے۔وفاقی حکومت کی جانب سے مطلع کردہ سبسڈی کی رقم کو شامل کرنے کے بعد نیپرا کی طرف سے تمام ڈسکوز کے لئے یکساں ٹیرف کا تعین کیا جاتا ہے، جس کا وفاقی حکومت نوٹیفکیشن جاری کرتی ہے،

نوٹیفکیشن ہونے کے بعد صارفین سے تعین کیا گیا ٹیرف وصول کیا جاتا ہے، میپکو، پیسکو گیپکو، حیسکو، سیپکو، کیسکو اور ٹیسکو نے مالی سال 2020-21 سے لے کر 2024-25 تک کے ملٹی ائیرٹیرف کے لئے درخواستیں دی تھی، آئیسکو، لیسکو اور فیسکو نے منظور شدہ ملٹی ائیر ٹیرف کے مطابق سالانہ ایڈجسٹمنٹ کی درخواستیں دی تھی، اتھارٹی نے فیصلوں میں مالی سال 2022-23 کے ٹیرف مقرر کیا ہے۔

نیپرا نے مالی سال 2022-23 کے لیے نیشنل اوسط ٹیرف 24.82 روپے فی یونٹ تعین کیا ہے، جو کہ گزشتہ ٹیرف سے 7.91 روپے فی یونٹ زیادہ ہے، اس سے قبل نیپرا کا تعین کردہ اوسط ٹیرف 16.91 روپے ہے ، ٹیرف بڑھنے کی بنیادی وجہ روپے کی قدر میں کمی ، کپیسٹی لاگت اور عالمی مارکیٹ میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ ہے۔

توانائی کی خریداری کی قیمت 1152 ارب روپے متوقع ہے، کپیسٹی لاگت بشمول این ٹی ڈی سی اور ایچ وی ڈی سی 1366 ارب روپے تخمینہ ہے، ڈسکوز کی کل ریونیو کا تخمینہ تقریبا 2805 ارب روپے متوقع ہے، میپکو، پیسکو گیپکو، حیسکو، سیپکو، کیسکو اور ٹیسکو کو 5 سالہ مدت میں ڈسٹری بیوشن سسٹم میں انویسٹمنٹ پروگرام کے لیے تقریباً 406 ارب روپے کی سرمایہ کاری کی اجازت دی گئی ہے، ڈسکوز کے ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن لاسز کو بھی 13.46 فیصد سے کم کر کہ 11.70 فیصد کر دیا گیا ہے ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More