نیب کی کارکردگی کی رپورٹ جاری

اسلام آباد: نیب نے چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی قیادت میں نیب کی کارکردگی رپورٹ جاری کر دی۔

جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے بطور چیئرمین نیب اپنی ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد نہ صرف جامع اور موثر انسداد بدعنوانی کی حکمت عملی بلکہ مختلف اقدامات بھی متعارف کرائے جن کے شاندار نتائج برآمد ہونے لگے ہیں۔ جسٹس جاوید اقبال کی قیادت میں نیب نے گزشتہ 4 سال سے زائد عرصہ کے دوران بدعنوان عناصر سے بلواسطہ اور بلاواسطہ طور پر 539 ارب وصول کیے ہیں جو کہ پچھلے سالوں کے مقابلے میں قابل ذکر کامیابی ہے۔

نیب کو اپنے آغاز سے اب تک510729 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 498256 شکایات کو نمٹا دیا گیا ہے۔ نیب نے 16307 شکایت کی تحقیقات کی منظوری دی ہے، جن میں سے15475 شکایت کی تحقیقات مکمل ہوچکی ہیں۔ نیب نے 10365 انکوائریوں کی منظوری دی جن میں سے 9299 انکوائریاں مکمل ہوچکی ہیں۔ قومی احتساب بیورو نے 4707 انوسٹی گیشنز کی منظوری دی ہے جن میں سے 4377 انوسٹی گیشنز مکمل ہو چکی ہیں۔

نیب نے اپنے قیام سے اب تک 822 ارب روپے بالواسطہ اور بلاواسطہ طور پر بر آمد کئے۔ نیب نے اپنے قیام سے اب تک 3772 ریفرنسز معزز احتساب عدالتوں میں دائر کیے جن میں سے2508 ریفرنسز کو قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچایا گیا۔اس وقت 1264 ریفرنس جن کی مالیت 1335.019 ارب روپے ہے مختلف احتساب عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔

نیب کی انفورسمنٹ اسٹریٹیجی کے مطابق نیب نے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال کی قیادت میں تحقیقات مکمل کرنے کے لیے 10ماہ کا وقت مقرر کیا۔ نیب نے اپنے تمام علاقائی بیوروز میں شواہد اکٹھے کرنے کے لئے سیل بھی قائم کیے ہیں۔ اس وجہ سے، نیب ٹھوس دستاویزی شواہد کی بنیاد پر قانون کے مطابق فاضل عدالتوں میں اپنے مقدمات کی بھرپور پیروی کر رہا ہے اور اس کا مجموعی سزا کا تناسب تقریبا 66 فیصد ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More