مراد علی شاہ نے او جی ڈی سی ایل میں سندھ کی نمائندگی مانگ لی

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے او جی ڈی سی ایل، پی پی ایل، پی ایس او، ایس ایس جی سی ایل اور او گرا میں سندھ کی نمائندگی مانگ لی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے وزیراعظم کو درخواست کی کہ سندھ کے دیہاتوں کو گیس مہیا کرنے پر عائد پابندی اٹھائی جائے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے او جی ڈی سی ایل، پی پی ایل، پی ایس او، ایس ایس جی سی ایل اور او گرا میں سندھ کی نمائندگی مانگ لی۔وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ آئین کے مطابق جس صوبے سے گیس نکلے گی اس پر اسی صوبے کا پہلا حق ہے۔ وفاقی حکومت ڈبلیو اے سی او جی پالیسی تھوپنا چاہتی ہے۔ڈبلیو سی او جی پالیسی کے تحت امپورٹڈ اورلوکل گیس کو پول کر کے گیس کی قیمت کا تعین کیا جائے گا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سندھ سے نکلنے والی گیس دیگر صوبوں کو مہیا کیاجا رہا ہے جس کے باعث سندھ میں گیس کی لوڈ شیڈنگ کی جاتی ہے۔وزیراعلیٰ سندھ نے وزیراعظم کو درخواست کی کہ سندھ کے دیہاتوں کو گیس مہیا کرنے پر عائد پابندی اٹھائی جائے ۔

مراد علی شاہ نے وزیر اعظم سے درخواست کرتے ہوئے کہا کہ اسلام کوٹ سے چھوڑ تک 105 کلومیٹر ریلوے لائن بچھانے کا منصوبہ تیار ہے۔یہ ریلوے لائن تھر کول کی ٹرانسپوٹیشن کے لئے ضروری ہے۔وزارت ریلوے نے اس منصوبے کی فزیبلٹی تیار کی ہے۔وزیراعلیٰ سندھ نے وزیراعظم کو درخواست کی کہ یہ منصوبہ فوری شروع کیا جائے۔

صوبے میں بجلی کے مسائل کے حوالے سے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ نیپرا ایکٹ میں وفاقی حکومت نے یکطرفہ ترمیم کی جس کی وجہ سے سندھ اپنا ممبر نامزد نہیں کر سکتا ہے۔یہ سندھ کے ساتھ زیادتی ہے اس کو ٹھیک کیا جائے۔سندھ میں بجلی کی 12-12 گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ ہو رہی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More