مونکی پوکس: پاکستان میں پہلا کیس رپورٹ

لاہور: کورونا وائرس کے بعد پاکستان میں نئی وبا آگئی، لاہور کے جناح ہسپتال میں مونکی پاکس بیماری کا پہلا مریض رپورٹ ہوگیا۔

اسپتال ذرائع کےمطابق جناح اسپتال کے میڈیکل یونٹ ون میں مونکی پوکس کا مریض زیر علاج ہے، مریض میں مونکی پوکس کے وائرس کی تشحیص ہوئی ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق مونکی پوکس وائرس کی ابتدائی علامات میں بخار، سر درد، سوجن، کمر میں درد، پٹھوں میں درد اور عام طور کسی بھی چیز کا دل نہ چاہنا شامل ہیں، مونکی پوکس کی بیماری بندروں سے لگتی ہے اور یہ ایک انسان سے دوسرے انسان میں منقتل بھی ہوتی ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے پہلے مشتبہ کیس کا نوٹس لیتے ہوئے محکمہ صحت کوچوکس رہنے کا حکم دے دیا۔ حمزہ شہباز نے منکی پوکس کےمرض سےبچاؤکےلئےضروری احتیاطی تدابیر، ائیرپورٹس پرمسافروں کی سکریننگ کا موثر میکنزم وضع کرنے اور منکی پوکس مرض کےحوالےسےمانیٹرنگ سیل قائم کرنے کا بھی حکم دے دیا۔

حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ محکمہ صحت عالمی ادارہ صحت کی وضع کردہ احتیاطی تدابیرپرعملدرآمدکوہرقیمت پریقینی بنائے جائے۔ انہوں نے مرض کے پھیلاؤ روکنے کےلئے پیشگی حفاظتی اقدامات، مرض سے بچاؤ اور احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کے حوالے سے عوام کیلئے بھر پور آگاہی مہم چلانے کا بھی حکم دے دیا۔

دوسری جانب قومی ادارہ صحت نے منکی پاکس سے متعلق ہائی الرٹ جاری کر دیا ہے۔ منکی پاکس کے بارے میں وفاقی اور صوبائی اداروں کو الرٹ جاری کیا گیا ہے، محکمہ صحت سندھ نے بھی منکی پاکس بیماری پھیلنے کا خدشے کے تحت الرٹ جاری کردیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More