اب صرف جلسے نہیں مسلسل سڑکوں پرآنا ہوگا، مولانا فضل الرحمان

فیصل آباد : پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ غیر ملکی تحائف چھپانے والے قوم کے چہرے پر بد نما داغ ہیں، انہیں دھونے کیلئے سڑکوں پر آنا ہوگا۔

فیصل آباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے امیر جمعیت علمائے اسلام ف کا کہنا تھا کہ احتساب کا ڈرامہ اب ختم ہوچکا ہے، پی ڈی ایم کا پلیٹ فارم صرف اقتدارحاصل کرنے کے لیے نہیں بنایا گیا،اب پی ڈی ایم نے تمہارا احتساب شروع کر کے کیفر کردار تک پہنچانا ہے۔ ہم پاکستان کوانصاف کا گہوارا بنائیں گے۔ ہم اداروں کے دشمن نہیں، مستحکم اورطاقتوردیکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئین نے ہرادارے کا دائرہ کارمتعین کیا ہے، ہرایک کواپنے دائرے میں رہ کرذمہ داری ادا کرنا ہوگی، پارلیمنٹ عوام کی نمائندہ اوربااختیارادارہ ہے، آج ملکی معیشت کوتباہ کردیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین کے ساتھ سترسال سے دوستی ہے، بیجنگ کے ساتھ دوستی کو شہد سے زیادہ میٹھی سمجھتے ہیں، دوست ملک نے پاکستان میں70ارب ڈالرکی سرمایہ کی، عمران خان نے چین کوبھی ناراض کردیا ہے۔ چین دنیا کی ایک متبادل اقتصادی قوت بننے جارہا ہے، پاکستان پردباؤبڑھ گیا ہے، آج کا حکمران چین کی اقتصادی قوت کو توڑنے کا ایجنڈا لیکر آیا ہے، اگرمعیشت گر جائے تو پھر ریاست اپنا وجود برقرار نہیں رکھ سکتی۔ افغان جہاد نے سوویت یونین کوزمین بوس کردیا تھا، ایک بارپھردنیا میں معیشت کی جنگ شروع ہوچکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایران اس وقت بھارت کے ترازو میں بیٹھا ہوا ہے، بھارت نے کشمیرچھین لیا اورتم کشمیرفروش ہو، تم اپنی قوم سے غداری کر رہے ہو، کس بنیاد پر تمہیں قوم کا نمائندہ کہا جائے، تم کب تک فلانا چور، چور کہتے رہو گے، منفی نعرے کی بنیاد پرتم سیاست کر رہے ہو، تم نے مجھ پربھی الزامات لگائے تھے، تمہیں اندازہ ہوگیا تھا تمہارے لیے میرا ایک مکا ہی کافی ہے۔

پی ڈی ایم سربراہ کا کہنا تھا کہ روزانہ کی بنیاد پرقیمتوں میں اضافہ ہوتا ہے۔ غریب عوام پرمہنگائی کے پہاڑتوڑدیئے ہیں۔ ایک کروڑنوکریوں کا نعرہ لگاکرقوم کو بیوقوف بنایا گیا، نوکریاں دینے کے بجائےتیس لاکھ ملازمین کوفارغ کردیا گیا۔ پی ڈی ایم کوکہتا ہوں اب صرف جلسے نہیں مسلسل سڑکوں پرآنا ہوگا، اگرقوم مایوس ہوگئی توپھرپاکستان کا مستقبل خون خرابے کے علاوہ کچھ نہیں ہوگا، قوم میدان میں آئے تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تم نے تمام سیاست دانوں کو چور کہا منہ کی کھائی، تم نے توتحفے کی گھڑیاں بھی بیچ دی ہے، ایسا لالچی پہلے کبھی نہیں دیکھا، گھڑی بیچنے والے کو شرم نہیں آتی، یہ قوم کے چہرے پربدنما داغ ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More