شوکت ترین کی زیر صدارت کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس

اسلام آباد:کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے طبی مقاصد کے لیے آکسیجن کی بلاتعطل فراہمی اور طبی مقاصد کے لیے آکسیجن گیس، سلنڈر اور کرائیوجینک ٹینکوں پر ڈیوٹی اور ٹیکس میں چھوٹ کی منظوری دے دی گئی ۔

وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا ۔اجلاس میں وفاقی وزیر خوراک فخر امام ، وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر ، وفاقی وزیر صنعت خسرو بختیار وفاقی سیکرٹریز اور سینئر افسران نے شرکت کی ۔

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں طبی مقاصد کے لیے آکسیجن کی بلاتعطل فراہمی اور طبی مقاصد کے لیے آکسیجن گیس ، سیلنڈر اور کرائیوجینک ٹینکوں پر ڈیوٹی اور ٹیکس میں چھوٹ کی منظوری دی گئی ہے ۔ ملک میں کورونا کی پانچویں لہر سے نمٹنے کے لئے چھوٹ 30 جون 2022ء تک دی گئی۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ کامیاب پاکستان پروگرام کی ملک بھر میں توسیع بارے فنانس ڈویژن کی پیش کردہ سمری منظور کرلی گئی جبکہ درآمدی یوریا کی قیمت کے تعین بارے سمری پر غور ، یوریا کی درآمد کے لاگت کے تخمینے کی منظوری دیدی۔وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے درمیان لاگت ففٹی ففٹی کی بنیاد پر تقسیم کرنے کی منظوری دی گئی ۔مجموعی طور پر 12 ارب 34 کروڑ روپے لاگت کی یوریا کی درآمد کی جائے گی۔

اعلامیہ میں بتایا گیا ہے کہ دوطرفہ دفاعی اور سیکیورٹی تعاون کو بڑھانے کے لیے سری لنکا کو 50 ملین ڈالر کی ڈیفنس کریڈٹ لائن سہولت جبکہ کراچی پورٹ ٹرسٹ میں ٹی سی پی کے یوریا کے جہازوں کی آمد اور ترجیحی برتھنگ کی سمری کی بھی منظوری دی گئی ہے ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More